اسلام ٹائمز 28 Nov 2022 گھنٹہ 23:15 https://www.islamtimes.org/ur/news/1027382/قوم-کو-اسلامی-نظام-ترقی-دے-سکتا-ہے-مولانا-عبدالحق-ہاشمی -------------------------------------------------- ٹائٹل : قوم کو اسلامی نظام ترقی دے سکتا ہے، مولانا عبدالحق ہاشمی -------------------------------------------------- مولانا عبدالحق ہاشمی نے کہا کہ بلوچستان کو حکمرانوں، بااختیار طبقات اور وفاق و صوبائی حکومتوں نے ملکر تباہ کیا۔ متن : اسلام ٹائمز۔ امیر جماعت اسلامی بلوچستان مولانا عبدالحق ہاشمی نے کہا کہ حکمرانوں نے پشین سمیت بلوچستان کے دیگر بڑے زرعی اضلاع کو اپنی حالت پر چھوڑ دیا۔ بجلی کی لوڈشیڈنگ، گیس کی بندش، زرعی پانی کا گراپ نیچے جانے کی وجہ سے زمیندار کسان تباہ ہوئے۔ رہی سہی کسر سیلاب و بارشوں نے پوری کر دی۔ ساحل و وسائل پر اختیار، بارڈر و ساحل پر آسانی سے کاروبار، تعلیم و صحت کی سہولیات اہل بلوچستان کا بنیادی حق ہے۔ وسائل کی منصفانہ تقسیم، بدعنوانی کے خاتمے اور دیانت دار قیادت آنے سے عوامی مسائل و مشکلات میں کمی آسکتی ہے۔ خاندانی دشمنیوں نے بہت سے اضلاع، قبائل کو تباہ و پسماندہ کر دیا ہے۔ جماعت اسلامی قوم کو ساتھ ملا کر ترقی و خوشحالی کا اسلامی سفر شروع کر رہی ہے۔ قوم کو اسلامی نظام ترقی دے سکتا ہے۔   ان خیالات کا اظہار انہوں نے دورہ پشین کے دوران پشین میں دفتر کے افتتاح، تقاریب سے خطاب اور ذمہ داران سے ملاقات کے دوران گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ ان کے ہمراہ صوبائی نائب امیر ڈاکٹر عطاء الرحمان، امیر ضلع پشین ظہور احمد کاکڑ، صوبائی ڈپٹی جنرل سیکرٹری سید نورالحق ایڈوکیٹ، سردار سیف الرحمان ترین، نصیب اللہ خلجی، محمد اسحاق کاکڑ و دیگر ذمہ داران و کارکنان بھی تھے۔ مولانا عبدالحق ہاشمی و دیگر مقررین نے کہا کہ بلوچستان کو حکمرانوں، بااختیار طبقات اور وفاق و صوبائی حکومتوں نے ملکر تباہ کیا۔ بلوچستان کے مظلوم عوام کو نہ قانونی تجارت کی اجازت ہے۔ نہ سمندر سے مچھلیاں نکال کر بیچ سکتے ہیں۔ نہ ہمسائیہ ممالک سے کوئی کاروبار کرسکتے ہیں، نہ انکے پاس زراعت کی ترقی کیلئے پانی و بجلی ہے۔ نہ بہترین علاج کیلئے ہسپتال اور نہ معیاری تعلیم کی بہترین تعلیمی ادارے ہیں۔   بلوچستان کو پسماندہ رکھا گیا ہے۔ چیک پوسٹیں دی جا رہی ہیں۔ بارڈرز پر بلاوجہ کی سختیاں، ساحل پر لوٹ مار، جبکہ ان سب کے باوجود منتخب نمائندے، حکمران، خاموش تماشائی کا منفی کردار ادا کر رہے ہیں۔ جماعت اسلامی ان مظالم و زیادتیوں کے خلاف ہر پلیٹ فارم پر آواز بلند کر رہی ہے۔ مظلوم بلوچستان کے عوام ہر وقت احتجاج پر، لیکن حکمران خاموش تماشائی کا کردار ادا کر رہے ہیں۔ بلوچستان کے عوام کو پینے کا صاف پانی میسر نہیں۔ سردیوں میں گیس بند اور گرمیوں میں بجلی و پانی کی قلت ہے۔ ہر طرف عوام پریشان اور دو وقت کے کھانے کو ترس رہے ہیں۔ جماعت اسلامی پریشان حال مظلوم عوام کے ساتھ ہے۔ ہم اسمبلی، عدالت و گلی، کوچوں، چوراہوں میں حقوق کے حصول، ظلم و جبر کے خاتمے اور انصاف کیلئے جدوجہد کر رہے ہیں۔