اسلام ٹائمز 4 Nov 2019 گھنٹہ 18:48 https://www.islamtimes.org/ur/news/825601/عالمی-میلاد-کانفرنس-مینار-پاکستان-گروانڈ-میں-ہی-ہو-گی-نوراللہ-صدیقی -------------------------------------------------- ٹائٹل : عالمی میلاد کانفرنس مینار پاکستان گروانڈ میں ہی ہو گی، نوراللہ صدیقی -------------------------------------------------- تحریک منہاج القرآن کے ترجمان کا کہنا تھا کہ عالمی میلاد کانفرنس سے قائد تحریک منہاج القرآن شیخ الاسلام ڈاکٹر محمد طاہرالقادری براہ راست خطاب کرینگے۔ کارکن آقا ﷺ کی ولادت کا جشن منانے کیلئے بھرپور تیاریاں کریں۔ انہوں نے کہا کہ زمین و آسمان کی تخلیق اور ساری نعمتیں تاجدار ختم نبوت ﷺ کے دم قدم سے ہیں۔ متن : اسلام ٹائمز۔ ترجمان تحریک منہاج القرآن نور اللہ صدیقی نے کہا ہے کہ تحریک منہاج القرآن کے زیر اہتمام36 ویں عالمی میلاد کانفرنس مینار پاکستان لاہور میں ہو گی، تیاریوں و انتظامات کیلئے سنٹرل ورکنگ کونسل کا اجلاس 4 نومبر کو مرکزی سیکرٹریٹ ماڈل ٹاون میں دن 11بجے ہوگا۔ عالمی میلاد کانفرنس سے قائد تحریک منہاج القرآن شیخ الاسلام ڈاکٹر محمد طاہرالقادری براہ راست خطاب کرینگے۔ کارکن آقا ﷺ کی ولادت کا جشن منانے کیلئے بھرپور تیاریاں کریں۔ انہوں نے کہا کہ زمین و آسمان کی تخلیق اور ساری نعمتیں تاجدار ختم نبوت ﷺ کے دم قدم سے ہیں۔ نور اللہ صدیقی نے مزید کہا کہ پیغمبر اسلام ﷺنے انسانیت کو مساوات اور اخوت کا درس دیا آپکی زندگی انسانیت کیلئے اعلیٰ ترین نمونہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ تحریک منہاج القرآن نے اللہ کی توفیق سے ہر سال ولادت باسعادت کی نسبت سے عالمی میلاد کانفرنس کا انعقاد یقینی بنایا اور میلاد کلچر کو عام کیا اور عشق مصطفی ﷺ کی شمعیں گھر گھر، گلی گلی میں روشن کیں اور نوجوانوں کے دلوں کو سیرت النبی ﷺ اور عشق مصطفی ﷺ کی روشنی سے ہم آہنگ رکھا۔ عالمی میلاد کانفرنس مین اندرون و بیرون ملک سے بڑی تعداد میں علماء مشائخ و دیگر مذاہب کے نمائندے شرکت کرینگے۔ عالمی میلاد کانفرنس میں تمام مذاہب اور مسالک کے رہنماوں کو شرکت کی دعوت دی گئی ہے۔ تحریک منہاج القرآن کا سٹیج بین المذاہب و بین المسالک ہم آہنگی و قومی یکجہتی کا آئینہ دار ہو گا۔ انہوں نے کہا کہ میلاد النبی ﷺ کے پروگرامز، کانفرنسز کا انعقاد پیغمبر اسلام کی صورت میں میسر آنیوالی اللہ کی بیش قدر نعمت کے اظہار تشکر کا خوبصورت ذریعہ ہیں، پیغمبر امن حضرت محمد ﷺ نے غلام کو آقا کے برابر بٹھایا، عورتوں، مزدوروں، جانوروں، پرندوں سمیت کمزور طبقات کے حقوق متعین کئے اور نہیں باوقار سماجی مقام دیا۔