اسلام ٹائمز 13 Dec 2017 گھنٹہ 19:25 https://www.islamtimes.org/ur/news/689779/پاک-فوج-فاٹا-کی-قومی-دھارے-میں-شمولیت-مکمل-حمایت-کرتی-ہے-ا-رمی-چیف -------------------------------------------------- ٹائٹل : پاک فوج فاٹا کی قومی دھارے میں شمولیت کی مکمل حمایت کرتی ہے، آرمی چیف -------------------------------------------------- فاٹا سے آنیوالے وفد سے ملاقات کے دوران جنرل قمر جاوید باجوہ نے دہشتگردی کیخلاف جنگ میں پاک فوج کیساتھ مکمل تعاون کرنے پر قبائلی عمائدین اور نوجوانوں کی تعریف کی، انہوں نے کہا کہ فاٹا کے بہادر عوام کی قربانیوں کے ذریعے جو کامیابیاں حاصل کی گئیں ہیں انہیں مزید مستحکم کیا جارہا ہے جبکہ ملک پائیدار امن کیجانب گامزن ہے۔ متن : اسلام ٹائمز۔ پاک فوج کے سربراہ جنرل قمر جاوید باوجوہ کا کہنا ہے کہ فوج فاٹا کی قومی دھارے میں شمولیت کی مکمل حمایت کرتی ہے۔ پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ آئی ایس پی آر کے مطابق آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے وفاقی منتظم شدہ قبائلی علاقہ جات (فاٹا) سے آنے والے وفود کو یقین دہانی کرائی کہ پاک فوج فاٹا کو قومی دھارے میں شامل کرنے کے عمل کی مکمل حمایت کرتی ہے۔ آئی ایس پی آر کے مطابق قبائلی عمائدین اور یوتھ جرگہ کے وفود نے آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ سے علیحدہ علیحدہ ملاقاتیں کیں۔ وفود نے فاٹا کی قومی دھارے میں شمولیت کے حوالے سے پاک فوج کی قربانیوں، کاوشوں اور کردار کو سراہا۔ اس موقع پر آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے دہشت گردی کے خلاف جنگ میں پاک فوج کے ساتھ مکمل تعاون کرنے پر قبائلی عمائدین اور نوجوانوں کی تعریف کی۔ آئی ایس پی آر کے مطابق آرمی چیف نے کہا کہ وہ فاٹا کے مستقبل کے حوالے سے قبائلی وفود کے خیالات کو قدر کی نگاہ سے دیکھتے ہیں۔ ترجمان پاک فوج کے مطابق آرمی چیف کا مزید کہنا تھا کہ فاٹا کے بہادر عوام کی قربانیوں کے ذریعے جو کامیابیاں حاصل کی گئیں ہیں انہیں مزید مستحکم کیا جارہا ہے جبکہ ملک پائیدار امن کی جانب گامزن ہے۔ سربراہ پاک فوج نے اس موقع پر شرکاء کو پاک افغان سرحد پر کئے جانے والے سکیورٹی انتظامات اور باہمی تعاون کے حوالے سے افغان قیادت سے ہونے والے مذاکرات کی تفصیلات سے بھی آگاہ کیا۔ آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے اس موقع پر نوجوانوں سے کہا کہ وہ فاٹا اور پاکستان میں قیام امن اور ترقی کیلئے اپنا کردار ادا کرتے رہیں، کیونکہ مستقبل میں ملک کی باگ ڈور نوجوانوں نے ہی سنبھالنی ہے۔