اسلام ٹائمز 21 Jan 2019 گھنٹہ 13:32 https://www.islamtimes.org/ur/news/773291/بلوچستان-کے-33-اضلاع-میں-سہ-روزہ-انسداد-پولیو-مہم-آج-سے-شروع-ہوگی -------------------------------------------------- ٹائٹل : بلوچستان کے 33 اضلاع میں سہ روزہ انسداد پولیو مہم آج سے شروع ہوگی -------------------------------------------------- اپنے بیان میں ایمرجنسی آپریشن سینٹر کوآرڈینیٹر کا کہنا تھا کہ آج سے شروع ہونے والی پولیو مہم انتہائی اہمیت کی حامل ہے۔ اس ضمن میں ٹرانزٹ پوائنٹس پر بھی خصوصی توجہ دی جا رہی ہے، تاکہ پولیو وائرس کو پھیلنے سے روکا جا سکے۔ ہم نے عزم کر رکھا ہے کہ اس وقت تک چین سے نہیں بیٹھیں گے جب تک پورے صوبے سے پولیو کا خاتمہ نہیں کیا جاتا۔ متن : اسلام آباد۔ بلوچستان کے 33 اضلاع میں تین روزہ انسداد پولیو مہم آج بروز پیر سے شروع ہوگی، جس کے لئے تیاریاں مکمل کرلی گئی ہیں۔ ان خیالات کا اظہار ایمرجنسی آپریشن سینٹر کوآرڈینیٹر راشد رزاق نے اپنے ایک بیان میں کیا۔ انہوں نے کہا کہ سہ روزہ انسداد پولیو مہم کے دوران پانچ سال تک کی عمر کے 25 لاکھ بچوں کو پولیو سے بچاؤ کے قطرے پلانے کا ہدف مقرر کیا گیا ہے۔ اس مہم کے دوران 10ہزار 356 کے قریب ٹیمیں حصہ لینگی۔ جن میں 8 ہزار 829 موبائل ٹیمیں، 951 فکسڈسائٹ اور 576 ٹرانزٹ پوائنٹس شامل ہیں۔ راشد رزاق نے کہا ہے کہ اس وقت دنیا بھر میں پاکستان اور افغانستان دو ایسے ممالک ہیں جہاں پر پولیو وائرس موجود ہے۔ افغانستان میں پولیو کیسز کے باعث سرحدی علاقوں بالخصوص قلعہ عبداللہ سمیت دیگر علاقوں میں پولیو کے خدشے کے پیش نظر تدارک کیلئے خصوصی اقدامات کئے جارہے ہیں۔ کوئٹہ، پشین اور بالخصوص ضلع قلعہ عبداللہ میں بچوں کے لئے پولیو وائرس سے متاثر ہونے کا خدشہ ابھی بھی موجود ہے۔ عالمی سطح پر پولیو وائرس پر نظر رکھنے والے خصوصی گروپ ((Technical Advisory Group) نے قلعہ عبداللہ، کوئٹہ، پشین میں وائرس کی موجودگی پر حکومت بلوچستان کو تجویز دی ہے کہ علاقہ پر خصوصی توجہ دیکر پولیو کے خاتمے کیلئے اقدامات کئے جائیں۔ آج سے شروع ہونے والی پولیو مہم انتہائی اہمیت کی حامل ہے۔ اس ضمن میں ٹرانزٹ پوائنٹس پر بھی خصوصی توجہ دی جارہی ہے، تاکہ پولیو وائرس کو پھیلنے سے روکا جا سکے۔ ہم نے عزم کر رکھا ہے کہ اس وقت تک چین سے نہیں بیٹھیں گے جب تک پورے صوبے سے پولیو کا خاتمہ نہیں کیا جاتا، اور پولیو کا خاتمہ کرنے کے لئے انسداد پولیو کی ہر مہم میں پانچ سال تک کی عمر کے بچوں کو پولیو سے بچاؤ کی ویکسین پلانا لازمی ہے اور ساتھ ہی ساتھ بچوں کو حفاظتی ٹیکہ جات کا کورس مکمل کرانا بھی لازمی ہے، تاکہ بچوں میں پولیو سمیت دیگر خطرناک اور جان لیوا بیماریوں سے بچنے کے لئے قوت مدافعت پیدا ہو۔ راشد رزاق نے کہا کہ انسداد پولیو مہم کو کامیاب اور ہر بچے کو قطرے پلانے کیلئے کمیونٹی ہیلتھ رضاکاروں کی بھی خدمات لی جارہی ہیں، جو ان ہائی رسک علاقوں میں کام کرینگے، جہاں بچوں تک رسائی مشکل ہے۔ اس عمل کو بہتر بنانے کیلئے علماء کرام، قبائلی رہنماؤں اور معتبرین کی بھی مدد لی جارہی ہے۔ ہماری میڈیا، عوام اور ہر شہری سے اپیل ہے کہ وہ اس مہم کو کامیاب بنانے کیلئے اپنا کردار ادا کریں تاکہ ہمارے بچے مستقل معذوری سے بچ سکیں۔ پولیو لاعلاج مرض ہے اور پولیو ویکسین پلا کر ہی بچوں کو اس سے محفوظ کیا جا سکتا ہے۔