0
Saturday 17 Jul 2021 01:02

کوئٹہ، ایم ڈبلیو ایم کے وفد کی گورنر بلوچستان سے ملاقات

  • مجلس وحدت مسلمین بلوچستان کے وفد کی گورنر بلوچستان سید ظہور آغا سے ملاقات

    مجلس وحدت مسلمین بلوچستان کے وفد کی گورنر بلوچستان سید ظہور آغا سے ملاقات

  • مجلس وحدت مسلمین بلوچستان کے وفد کی گورنر بلوچستان سید ظہور آغا سے ملاقات

    مجلس وحدت مسلمین بلوچستان کے وفد کی گورنر بلوچستان سید ظہور آغا سے ملاقات

  • مجلس وحدت مسلمین بلوچستان کے وفد کی گورنر بلوچستان سید ظہور آغا سے ملاقات

    مجلس وحدت مسلمین بلوچستان کے وفد کی گورنر بلوچستان سید ظہور آغا سے ملاقات

  • مجلس وحدت مسلمین بلوچستان کے وفد کی گورنر بلوچستان سید ظہور آغا سے ملاقات

    مجلس وحدت مسلمین بلوچستان کے وفد کی گورنر بلوچستان سید ظہور آغا سے ملاقات

اسلام ٹائمز۔ نئے گورنر بلوچستان سید ظہور آغا سے ملاقات کیلئے مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی ترجمان علامہ مقصود علی ڈومکی اور رکن شورائے عالی علامہ سید ہاشم موسوی کی قیادت میں ایک وفد گورنر ہاؤس کوئٹہ گیا اور انہیں گورنر بلوچستان کے منصب کی مبارکباد پیش کی۔ اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے علامہ مقصود علی ڈومکی نے کہا کہ بلوچستان میں دہشتگردی کے مسلسل سانحات کے پیش نظر مجرموں کا تعاقب ضروری ہے۔ دہشتگردی کے سانحات میں ملوث مجرموں کو کیفر کردار تک پہنچایا جائے۔ انہوں نے کہا کہ مجلس وحدت مسلمین پاکستان محب وطن جماعت ہے، جو ملک میں امن و اتحاد کے فروغ کے لئے مصروف عمل ہے۔ محرم الحرام کے دوران قیام امن کے سلسلے میں ہمارا حکومت اور ریاستی اداروں سے مکمل تعاون رہے گا۔ انہوں نے کہا کہ اسکول فروغ تعلیم کا مرکز ہوتے ہیں، جس طرح پاک ترک اسکول، پاک عرب اسکول اور برٹش و امریکن اسکولز اس ملک میں اپنی تعلیمی سرگرمیاں انجام دے رہے ہیں، اسی طرح پاک ایران اسکولز کو بھی قواعد و ضوابط کے تحت اپنی تعلیمی خدمات جاری رکھنے کی اجازت ہونی چاہیئے۔

اس موقع پر علامہ سید ہاشم موسوی نے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ دہشت گردی کے سانحات میں ہمارے دو ہزار معصوم شہری شہید ہوئے، ان کے قاتلوں کو بے نقاب کرنے کے لئے عدالتی کمیشن تشکیل دیا جائے۔ انہوں نے کہا کہ خدمت و فلاح انسانیت کے جذبے کے تحت ہم اجتماعی شادیوں کی تقریب منعقد کر رہے ہیں۔ جس میں شرکت کے لئے گورنر بلوچستان کو خصوصی طور پر دعوت دی گئی۔ اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے گورنر بلوچستان سید ظہور آغا نے کہا کہ ہزارہ قبیلہ اور اہل تشیع محب وطن ہیں اور اس ملک کے لئے ان کی قربانیاں لائق تحسین ہیں۔ دہشت گردی کے مختلف سانحات میں ہم آپ کے غم میں شریک رہے۔ جلد ہی ایک اعلیٰ سطحی اجلاس بلا کر آپ کے مسائل کے حل کے لئے عملی اقدامات کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ اسکولز کی طرف سے فروغ تعلیم کی کوشش قابل تعریف ہیں، مگر ان اسکولوں میں حکومت پاکستان کا منظور شدہ نصاب تعلیم پڑھایا جائے۔ اس موقع پر علامہ مقصود علی ڈومکی نے گورنر بلوچستان کو امام زین العابدین علیہ السلام کی دعاؤں کی کتاب صحیفہ سجادیہ اور عالم اسلام کے ممتاز عالم دین علامہ جلال الدین سیوطی کی معرکہ الآراء کتاب احیاء المیت فی فضائل اھل البیت علیہم السلام کا تحفہ پیش کیا۔ ملاقات میں مجلس وحدت مسلمین بلوچستان کے صوبائی رہنما علامہ شیخ ولایت حسین جعفری، آغا سہیل اکبر، پیر سید احسان علی شاہ دوپاسی، کربلائی رجب علی و دیگر موجود تھے۔
خبر کا کوڈ : 943815
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب
ہماری پیشکش