0
Saturday 2 Jul 2022 22:44

اسیروں کے معاملے پر ملی یکجہتی کونسل اور وزیراعلیٰ گلگت بلتستان میں اہم ملاقات

اسیروں کے معاملے پر ملی یکجہتی کونسل اور وزیراعلیٰ گلگت بلتستان میں اہم ملاقات
اسلام ٹائمز۔ گلگت کے اسیروں کی رہائی کے معاملے پر ملی یکجہتی کونسل کے نمائندہ وفد اور وزیراعلی ٰگلگت بلتستان کے مابین اہم ملاقات ہوئی۔ ملاقات میں سانحہ 13 اکتوبر کے اسیروں کی رہائی کے معاملے پر غور کیا گیا۔ ہفتہ کے روز وزیراعلیٰ گلگت بلتستان خالد خورشید سے جماعت اسلامی کے نائب صدر لیاقت بلوچ کی قیادت میں ملی یکجہتی کونسل پاکستان کے نمائندہ وفد نے ملاقات کی۔ ملاقات میں صوبائی وزراء راجہ زکریا مقپون، حاجی گلبر خان، جاوید علی منوا، صوبائی مشیر سید سہیل عباس اور معاون خصوصی الیاس صدیقی بھی شریک تھے۔ اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے وزیراعلیٰ خالد خورشید نے پورے ملک میں مذہبی و فرقہ وارانہ ہم آہنگی اور بھائی چارے کے فروغ کے حوالے سے ملی یکجہتی کونسل پاکستان کے کردار کو سراہا۔ وزیراعلیٰ نے کہا کہ پورے ملک بالخصوص جی بی کی پائیدار ترقی کیلئے امن و امان کا قیام اولین ضرورت ہے۔ سیاسی زعماء پر مشتمل پلیٹ فارم معاشرے کے تمام مکتبہ ہائے فکر کو متحد کرنے میں کلیدی کردار ادا کرسکتے ہیں۔

خالد خورشید نے کہا کہ اسیران ملت کے معاملے کو حکومت باریک بینی سے دیکھ رہی ہے۔ ان شاء اللہ قانون و انصاف کے مطابق اس معاملے کے تصفیہ کیلئے کوشاں ہیں۔ ملی یکجہتی کونسل کے وفد نے امن و امان کے قیام اور فرقہ وارانہ ہم آہنگی کے فروغ کیلئے اپنے ہر ممکن تعاون کی یقین دہانی کرائی۔ دوسری جانب اسیران ملت کی رہائی کیلئے احتجاج پورے گلگت بلتستان میں پھیل گیا ہے۔ گلگت گذشتہ دو روز سے مکمل جام ہے۔ عوام نے جگہ جگہ دھرنے دے کر گلگت شہر کی اہم شاہراہوں کو بند کر دیا ہے۔ اس سے پہلے اسیروں کے خانوادے کیپٹن ضمیر عباس شہید چوک پر گذشتہ چار روز سے دھرنا دیئے بیٹھے تھے، لیکن حکومت کی جانب سے کوئی اطمینان بخش جواب نہ ملنے پر دھرنے اور احتجاج کا دائرہ پورے گلگت میں پھیل گیا۔
خبر کا کوڈ : 1002360
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب
ہماری پیشکش