0
Sunday 18 Sep 2022 21:25

ایم کیو ایم پاکستان نے مراد علی شاہ کو ناکام وزیراعلیٰ قرار دے دیا

ایم کیو ایم پاکستان نے مراد علی شاہ کو ناکام وزیراعلیٰ قرار دے دیا
اسلام ٹائمز۔ ایم کیو ایم پاکستان کی رابطہ کمیٹی نے وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ کو ناکام وزیراعلیٰ قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ پولیس کے ہونے کے باوجود کراچی لاوارث شہر ہے۔ کراچی میں پریس کانفرنس کے دوران خواجہ اظہار الحسن نے کہا کہ کراچی پولیس چیف کا تاجروں سے ملاقات کے دوران بیان سمجھ سے بالاتر ہے، وہ شاید بھول گئے تھے کہ وہ کراچی کے پولیس افسر ہیں، اس میں کوئی شک نہیں کہ کراچی پولیس چیف قابل اور ایماندار افسر ہیں، پولیس چیف کس طرح کہہ سکتے ہیں کراچی والے اپنے پاوں پر کلہاڑی مار رہے ہیں، کراچی پولیس چیف کو کبھی بھی سیاسی بیان بازی نہیں کرنی چاہیئے، یہاں بدقسمتی سے پولیس کے تمام افسران سیاسی ہیں، ہم کراچی پولیس چیف کے بیان کی سخت مذمت کرتے ہیں۔

رہنما ایم کیو ایم پاکستان نے کہا کہ کراچی پولیس کے ہونے کے باوجو د کراچی لاوارث شہر ہے، کراچی میں کوئی بھی تاجر، کوئی علاقہ اب محفوظ نہیں رہا، گزشتہ 6 ماہ میں 800 سے زیادہ لوگ قتل ہوچکے ہیں، آج بھی کراچی میں زمینوں پر قبضے ہو رہے ہیں، من پسند ایس ایچ اوز کی سرپرستی میں جرائم پیشہ افراد دندناتے پھر رہے ہیں، کسی بھی جماعت نے کراچی میں اسٹریٹ کرائم پر آواز نہیں اٹھائی، اسٹریٹ کرائم پر پی ایس پی، پی ٹی آئی اور جماعت اسلامی کیوں خاموش ہے؟

خواجہ اظہار الحسن نے وزیراعلیٰ سندھ کو ناکام وزیراعلیٰ قرار دیتے ہوئے کہا کہ مراد علی شاہ بتائیں انہوں نے وزارت داخلہ کا محکمہ اپنے پاس کیوں رکھا ہے؟ وزیراعلیٰ سندھ سے نہ وزارت اعلیٰ چل رہی ہی نہ ہی وزارت داخلہ، آپ سے نہ اسٹریٹ کرائم کنٹرول ہوا بلکہ صوبے کو تباہ کردیا۔ رکن سندھ اسمبلی نے کہا کہ قائم علی شاہ کے دور میں لوگ مرتے تھے اور وہ سب اچھا کا راگ الاپتے تھے، ن لیگ اور پیپلز پارٹی نے کراچی میں ٹارگٹڈ آپریشن کا کریڈٹ لیا، ماضی کے گناہ ایم کیو ایم کے کھاتے میں لکھے جاتے ہیں، کہاں گیا آپ کا ٹارگٹڈ آپریشن، ماضی کے گناہ ایم کیو ایم کے کھاتے میں لکھے جاتے ہیں۔

خواجہ اظہار الحسن نے کہا کہ اسٹریٹ کرائم کے خاتمے کیلئے مربوط حکمت عملی بنائی جائے، ماڈل کورٹس بنائیں، ملزمان پر دہشت گردی کی دفعات لگائیں، پولیس کام نہیں کرسکتی تو اپیکس کمیٹی کا قیام عمل میں لایا جائے۔ کے الیکٹرک کے بل میں کے ایم سی ٹیکس لینے سے متعلق ایم کیو ایم کے رہنما نے کہا کہ بجلی کے بلوں میں میونسپل ٹیکس لگایا جارہا ہے، ہم پر بھتہ خور ادارے کے ذریعے بھتہ کیوں لگایا گیا، پہلے ہمیں 300 ارب روپے کے ٹیکس کا حساب دیا جائے، زبردستی ٹیکس لیا گیا تو ہوسکتا ہے تو بل بھرنا بند کردیں۔
خبر کا کوڈ : 1015015
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب
ہماری پیشکش