0
Monday 19 Sep 2022 21:08

گلگت بلتستان حکومت نے چیف کورٹ میں ججز کی تعیناتی مسترد کر دی، سپریم کورٹ جانے کا اعلان

گلگت بلتستان حکومت نے چیف کورٹ میں ججز کی تعیناتی مسترد کر دی، سپریم کورٹ جانے کا اعلان
اسلام ٹائمز۔ گلگت بلتستان حکومت نے چیف کورٹ میں ججز کی تعیناتی کو مسترد کرتے ہوئے سپریم کورٹ میں چیلنج کرنے کا مطالبہ کر دیا۔ وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان خالد خورشید کی زیر صدارت صوبائی کابینہ کا ویڈیو لنک پر 23 واں اجلاس ہوا۔ کابینہ اجلاس میں جی بی کی منتخب صوبائی اسمبلی و حکومت کو گھر بھیجنے کے عزائم اور من پسند فیصلوں کی سختی سے مذمت کرتے ہوئے اسے جی بی دشمن اپوزیشن کی شرارت قرار دیا۔ صوبائی کابینہ نے قانونی، سیاسی و عوامی ہر محاذ پر وفاقی امپورٹڈ حکومت کی سازشوں کا ڈٹ کر مقابلہ کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ 
 
اجلاس میں واضح کیا گیا کہ قانونی طور پر ججز کی تعیناتی ہو یا توسیع دونوں صورت میں صوبائی حکومت کی مشاورت لازمی قرار دی گئی ہے۔ گورنر کے پاس جانے والی سمری کو قانوناً صوبائی حکومت کے ساتھ کنسلٹیشن کرنا ضروری ہوتا ہے جسے سبوتاژ کیا گیا۔ کابینہ اجلاس کے موقع پر خطاب کرتے ہوئے وزیراعلی گلگت بلتستان خالد خورشید نے کہا کہ چیف کورٹ کے ججز تقرری کے معاملے میں وفاقی امپورٹڈ حکومت نے جی بی حکومت کے اختیارات پر شب خون مارا۔ قانون کی دھجیاں اڑائیں۔ جی بی حکومت کی مشاورت کے بغیر چیف کورٹ کے ججز کی تقرری قانون کی خلاف ورزی ہے۔
 
وزیراعلی نے کہا کہ وفاقی امپورٹڈ حکومت جی بی کی منتخب حکومت کو مکمل طور پر مفلوج کرنا چاہتی ہے۔ وفاق پر مسلط امپورٹڈ حکومت جی بی کی منتخب اسمبلی کو سازش کے ذریعے گھر بھیجنا چاہتی ہے۔ جی بی جیسے حساس علاقے کا وفاقی حکومت کی جانب سے استحصال پاکستان کو کمزور کرنے کے مترادف ہے۔ جو سوتیلا سلوک وفاقی امپورٹڈ حکومت نے جی بی کیساتھ روا رکھا ہے، ایسا افسوس ناک رویہ گزشتہ 75 سالوں میں نہیں دیکھا گیا۔
 
وزیراعلی نے خطاب کرتے ہوئے اس عزم کا برملا اظہار کیا کہ عوام کے تعاون سے وفاقی امپورٹڈ حکومت کو جی بی کی منتخب اسمبلی کے مدت اور حکومت کے اختیارات کیساتھ کھلواڑ کرنے نہیں دینگے۔ یہ گلگت بلتستان کے 22 لاکھ عوام کی توہین ہوگی۔ گلگت بلتستان کی منتخب اسمبلی کی مدت اور حکومت کے اختیارات کے تحفظ کے لئے تمام تر آپشنز بروئے لائیں گے۔ قانونی، سیاسی و عوامی ہر محاذ پر بھرپور طریقے سے امپورٹڈ حکومت کی سازش کا ڈٹ کر مقابلے کرںینگے۔ وفاقی امپورٹڈ حکومت جی بی کو کالونی کے طرز ٹریٹ کر رہی ہے۔
 
وزیراعلی نے کہا کہ چیرمین عمران خان نے جی بی کے عوام کی منتخب اسمبلی و صوبائی حکومت کے اختیارات کے تحفظ کے لئے اپنی بھرپور حمایت و تعاون کی یقین کرائی ہے اور صوبائی حکومت کو ہدایت کی ہے کہ امپورٹڈ وفاقی حکومت کے جی بی مخالف مذموم عزائم ناکام بنانے اور استحصالی اقدامات کے خاتمے کے لئے فوری طور پر قانونی چارہ جوئی کے لئے اعلی عدلیہ سے رجوع کریں گے۔
 
اجلاس میں صوبائی وزراء نے مشترکہ طور پر کہا کہ ججز تعیناتی ہو یا کوئی اور فیصلے جس میں صوبائی حکومت کی مشاورت کے بغیر ہو ہمیں قابل قبول نہیں۔انہوں نے مزید کہا کہ ہم ایک حکومت ہیں اور ہماری ایک حیثیت ہے۔ حکومت گلگت بلتستان کی مشاورت کے بغیر کسی بھی فیصلے کو نہیں مانتے۔ ہمیں عوام نے مینڈیٹ دیا ہے اور ہم اس کے پاسدار ہیں۔
 
صوبائی وزراء نے وزیر اعلیٰ جی بی کے اوپر بھرپور اعتماد کا اظہار کرتے ہوئے صوبائی حکومت کی مشاورت کے بغیر کسی بھی فیصلے کو مسترد کرنے کا اعلان کر دیا۔ کابینہ اجلاس میں صوبائی وزراء کا کہنا تھا کہ اپوزیشن کی شرارت کا صوبائی حکومت ڈٹ کر مقابلہ کریگی۔ صوبائی وزراء نے یکطرفہ فیصلوں کو غلط پریکٹس قرار دیتے ہوئے کہا کہ وفاق کی جانب سے ججز تعیناتی اور توسیعی عمل کو یکطرفہ فیصلہ گلگت بلتستان کی صوبائی حیثیت سے انکاری کے زمرے میں آتا ہے۔
 
خبر کا کوڈ : 1015186
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب
ہماری پیشکش