0
Monday 26 Sep 2022 21:39

ٹرانس جینڈر ایکٹ کا ترمیمی بل سینیٹ میں پیش

ٹرانس جینڈر ایکٹ کا ترمیمی بل سینیٹ میں پیش
اسلام ٹائمز۔ ٹرانس جینڈر ایکٹ کا ترمیمی بل سینیٹ میں پیش کر دیا گیا۔ پی ٹی آئی سینیٹر فوزیہ ارشد نے سینیٹ اجلاس میں خواجہ سراؤں کے تحفظ کے حوالے سے ترمیمی بل 2022ء ایوان میں پیش کیا۔ سینیٹر محسن عزیر کا کہنا تھا ٹرانس جینڈر اور جنس تبدیل کروانا دو علیحدہ معاملات ہیں، میں اللہ سے معافی مانگتا ہوں، جب یہ بل پاس ہوا تو میں ایوان میں تھا، ٹرانس جینڈر خواجہ سرا نہیں بلکہ ہم جنس ہیں، اس لئے اس کا تحفظ نہیں کیا جاسکتا۔ سینیٹر اعظم نذیر تارڑ نے یقین دہانی کروائی کہ حکومت کوئی ایسا کام نہیں کریگی، جو اسلام کے منافی ہو، بل کا مقصد خواجہ سراؤں کے حقوق کا خیال رکھنا ہے، سب سے استدعا ہے کہ اس بل پر سیاست نہ کریں بلکہ رہنمائی کریں، اس بل کے حوالے سے سب کی نیتیں صاف ہیں۔

چیئرمین سینیٹ نے مذکورہ بل متعلقہ قائمہ کمیٹی کے سپرد کر دیا، مخنث افراد کے تحفظ ایکٹ ترمیمی بل میں ٹرانسجینڈ ایکٹ میں شامل شق2، شق 3، شق 7 اور شق 8 میں ترامیم تجویز کی گئیں، مجوزہ بل کے تحت جنس کے اظہار سے مراد کسی فرد کی صنفی شناخت کی پیشکش ہے جبکہ جسمانی یا حیاتیاتی خصلت کی بنیاد پر مرد، عورت یا ٹرانسجینڈر کہا جائیگا، مجوزہ بل میں ٹرانسجینڈر کا خود سے مرضی کی جنس بتانے کی شق حذف کی جائے، مجوزہ بل کے مطابق مشکوک جنسی خصوصیات یا مرد اور عورت دونوں کی خصوصیات پر وراثت میں مرد اور عورت کا آدھا حصہ ہوگا۔

پارلیمنٹ ہاؤس میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے چیئرمین سینیٹ صادق سنجرانی نے کہا کہ ٹرانس جینڈر کا بل مارچ 2018ء کا بل ہے، جو میرے چیئرمین بننے سے پہلے منظور ہوا۔ جماعت اسلامی کے سینیٹر مشتاق احمد نے بل میں ترامیم پیش کی ہیں، جن سے متعلق غور کیا جا رہا ہے۔ ایوان بالا کوئی ایسا کام نہیں کرے گا، جو اسلامی قوانین کے منافی ہو۔ صادق سنجرانی کا کہنا تھا کہ مشاورت کے ساتھ اس معاملے کو حل کریں گے، لہٰذا معاملے کو سیاسی رنگ نہ دیا جائے۔ ضرورت پڑی تو علمائے کرام اور اسلامی نظریاتی کونسل سے بھی مشاورت کریں گے۔ نئے وزیر خزانہ سے متعلق بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ اسحاق ڈار کا مجھ سے کوئی رابطہ نہیں ہوا۔ وہ آئیں گے، حلف اٹھائیں گے تو کوئی اعتراض نہیں۔
خبر کا کوڈ : 1016300
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب
ہماری پیشکش