0
Thursday 8 Dec 2022 18:28

گزشتہ پانچ برسوں میں بھارت میں فرقہ وارانہ تشدد کے 2900 سے زیادہ واقعات رپورٹ ہوئے، مودی حکومت

گزشتہ پانچ برسوں میں بھارت میں فرقہ وارانہ تشدد کے 2900 سے زیادہ واقعات رپورٹ ہوئے، مودی حکومت
اسلام ٹائمز۔ گزشتہ پانچ برسوں کے دوران بھارت میں فرقہ وارانہ تشدد کے 2900 سے زائد واقعات رپورٹ ہوئے ہیں۔ بی جے پی حکومت نے راجیہ سبھا میں پوچھے گئے ایک سوال کے جواب میں یہ اطلاع دی۔ مودی حکومت کا کہنا تھا کہ گزشتہ برسوں کے مقابلے 2021ء میں اس طرح کے واقعات میں کمی آئی ہے۔ مرکزی وزیر مملکت برائے داخلہ نتیانند رائے نے راجیہ سبھا میں ایک تحریری جواب میں کہا کہ 2017ء سے 2021ء کے درمیان فرقہ وارانہ یا مذہبی فسادات سے متعلق 2908 معاملات درج کئے گئے۔ تاہم انہوں نے مزید کہا کہ این سی آر بی لنچنگ (ہجوم کی جانب سے کئے گئے تشدد) سے متعلق کوئی علیحدہ ڈیٹا درج نہیں کرتا۔

نتیانند رائے نے کہا کہ 4 جولائی 2018ء کو ریاستوں اور مرکز کے زیر انتظام علاقوں کو ایک ایڈوائزری جاری کی گئی تھی۔ جس میں ریاستوں سے یہ کہا کہ وہ تشدد کو بھڑکانے والی فرضی خبروں اور افواہوں کے پھیلاؤ پر نظر رکھیں، ان کا مؤثر طریقے سے مقابلہ کرنے کے لئے تمام ضروری اقدامات کریں اور قانون کو اپنے ہاتھ میں لینے والے افراد کے ساتھ سختی سے پیش آئیں۔ نتیانند رائے نے کہا کہ اس کے علاوہ ریاستی حکومتوں اور مرکز کے زیر انتظام علاقوں کی انتظامیہ کو 23 جولائی اور 25 ستمبر 2018ء کو ایڈوائزری جاری کی گئی تھی، جس میں ان سے کہا گیا تھا کہ وہ ملک میں ہجومی تشدد کے واقعات کو روکنے کے لئے اقدامات کریں۔
خبر کا کوڈ : 1029163
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب
ہماری پیشکش