0
Sunday 7 Jul 2024 22:29

الجاعونی اسکول کے بارے قابض صیہونی فوج کا دعوی سراسر جھوٹ ہے، حماس

الجاعونی اسکول کے بارے قابض صیہونی فوج کا دعوی سراسر جھوٹ ہے، حماس
اسلام ٹائمز۔ غزہ کے النصیرات کیمپ میں واقع الجاعونی اسکول میں انسانیت سوز بمباری پر مبنی غاصب اسرائیلی فوج کے نئے جنگی جرم کہ جس کے نتیجے میں 15 فلسطینی پناہ گزین شہید اور درجنوں زخمی ہوئے تھے؛ سے متعلق صیہونی دعووں کو مسترد کرتے ہوئے فلسطینی مزاحمتی تحریک حماس نے اعلان کیا ہے کہ قابض صیہونی فوج اپنے کھلے جنگی جرائم کے بارے رائے عامہ کو دھوکہ دینے کی کوشش کر رہی ہے۔

اس حوالے سے جاری ہونے والے اپنے ایک بیان میں اس بات پر تاکید کرتے ہوئے کہ اقوام متحدہ کی ذیلی ایجنسی انروا (UNRWA) کے ساتھ منسلک الجاعونی اسکول پر قابض دہشتگرد فوج کی وحشیانہ بمباری کہ جس میں ہزاروں پناہ گزین رہائش پذیر ہیں، مجرم صیہونی دشمن کا نیا جنگی جرم ہے، حماس نے کہا کہ اس اسکول کے مکینوں میں اکثریت خواتین، بچوں و بوڑھوں کی ہے اور اس اسکول پر بمباری غزہ کے مکینوں کے خلاف نسل کشی کا تسلسل اور تمام بین الاقوامی اقدار و قوانین کی کھلی خلاف ورزی ہے۔

حماس نے اپنے بیان کے آخر میں غاصب صیہونی رژیم کے بے بنیاد دعووں کو سختی کے ساتھ مسترد کرتے ہوئے کہا کہ النصیرات کیمپ میں واقع الجاعونی اسکول میں مزاحمتی فورسز کی موجودگی کا اسرائیلی دعوی، سراسر جھوٹ پر مبنی ہے جبکہ اس مذموم دعوے کا مقصد رائے عامہ کو دھوکہ دینا اور اسرائیلی جنگی جرائم کا جواز پیش کرنا ہے۔

واضح رہے کہ اس وحشیانہ حملے کا جواز پیش کرتے ہوئے کہ جس میں درجنوں نہتے فلسطینی پناہ گزین شہید و زخمی ہوئے ہیں، قابض صیہونی رژیم نے دعوی کیا ہے کہ "ہم نے مسلح عناصر کو اس اسکول کے اندر سرگرم دیکھا تھا۔"
خبر کا کوڈ : 1146354
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

ہماری پیشکش