0
Monday 8 Jul 2024 19:00

ماسکو نے شام سے داعش کے 20 بچوں کو واپس روس پہنچا دیا

ماسکو نے شام سے داعش کے 20 بچوں کو واپس روس پہنچا دیا
اسلام ٹائمز۔ ماسکو نے شام میں کرد حکام کے ساتھ ہم آہنگی کے بعد روسی شہریت کے حامل داعش کے 20 بچوں کو روس واپس پہنچا دیا ہے۔ اسلامی جمہوریہ ایران کے خبر رساں ادارے فارس نیوز کے مطابق "شمالی اور مشرقی شام کی خود مختار انتظامیہ" کے نام سے جانی جانے والی تنظیم نے شامی صوبے حسکه (شمال مشرق) کے " الهول" اور "روج" کیمپوں سے داعش دہشت گرد گروہ کے ارکان کے 20 روسی بچوں کو ان کے حوالے کیا۔ روسی خبر رساں ایجنسی "ریانوستی" نے اس ملک کے حکام کے حوالے سے ایک بیان شائع کرتے ہوئے ان بچوں کی روس منتقلی کی تصدیق کی ہے اور بتایا ہے کہ یہ بچے روسی طیارے میں اس ملک واپس آئے ہیں۔

روسی صدارتی ادارے میں بچوں کے حقوق کی کمشنر ماریا الکسیفنا لووا-بلوا نے کہا کہ داعش کے جن 20 بچوں کو ماسکو روس واپس لانے میں کامیاب ہوا ہے، ان کی عمریں 5 سے 15 سال کے درمیان ہیں۔ بلوا نے یہ بھی بتایا کہ ان بچوں میں سے 7 لڑکے اور 13 لڑکیاں ہیں۔ روسی حکام کی طرف سے شائع ہونے والے ایک بیان کے مطابق بچوں کو ماسکو کے ایک سینٹر میں طبی معائنے اور سماجی بحالی کے بعد روس میں ان کے رشتہ داروں کے حوالے کر دیا جائے گا۔ 2023ء کے آخر میں روس نے الہول اور روز کیمپوں سے داعش کے 34 بچوں کو اس ملک میں واپس کیا تھا۔

19 فروری کو شمالی اور مشرقی شام کی خود مختار انتظامیہ کے نام سے جانی جانے والی تنظیم نے داعش کے عناصر کے خاندان کے 72 بچوں اور 27 خواتین کو کرغزستان کے ایک وفد کے حوالے کیا، جو الہول کیمپ میں مقیم تھے۔ داعش دہشت گرد تنظیم کی سرگرمیوں کے دوران تقریباً 4500 روسی شہری عراق اور شام میں اس گروہ میں شامل ہوئے۔ ان عناصر کے مارے جانے یا گرفتار ہونے کے بعد ان لوگوں کے خاندان کے بہت سے افراد کو الہول اور روز کیمپوں میں ٹھہرایا گیا ہے۔
خبر کا کوڈ : 1146552
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

ہماری پیشکش