0
Saturday 7 Mar 2015 16:14

چیف سیکریٹری سندھ کے تبادلے کے معاملے پر آئینی بحران پیدا ہونے کا خطرہ

چیف سیکریٹری سندھ کے تبادلے کے معاملے پر آئینی بحران پیدا ہونے کا خطرہ
اسلام ٹائمز۔ چیف سیکریٹری سندھ کے تبادلے کے معاملے پر آئینی بحران پیدا ہونے کا خطرہ پیدا ہو گیا ہے۔ اطلاعات کے مطابق وزیر اعلیٰ ہاؤس سندھ کے ذرائع کا کہنا ہے کہ سندھ حکومت مزید 2 دن سجاد سلیم ہوتیانہ کو ہٹانے کا انتظار کرے گی، جس کے بعد وفاق پر یہ واضح کر دیا جائے گا کہ اگر سجاد سلیم ہوتیانہ کو ہٹانے کے وزیراعلیٰ سندھ قائم علی شاہ کے حکم پر عمل نہیں کیا گیا، تو سندھ حکومت بھی وفاق کے جاری کردہ تمام احکام ماننے کی پابند نہیں ہوگی۔ گزشتہ 3 دن سے وزیراعلیٰ سندھ کی ہدایات پر عمل نہ ہونے سے نہ صرف سندھ میں سنگین انتظامی بحران پیدا ہوگیا ہے، بلکہ وفاق اور صوبے کے درمیان انتظامی امور میں بھی آئینی بحران پیدا ہونے کا خطرہ بڑھتا جا رہا ہے۔ اطلاعات کے مطابق وزیراعلیٰ سندھ قائم علی شاہ نے جمعہ کی صبح اس معاملے پر سندھ حکومت اور پیپلز پارٹی سے وابستہ قانونی و آئینی ماہرین سے مشاورت کی، جنھوں نے وزیراعلیٰ سندھ کو بتایا کہ صوبائی حکومت آئینی طور پر چیف سیکریٹری کی تعیناتی کے معاملے پر وفاقی حکومت کی ایڈوائس پر عمل کرنے کی پابند نہیں۔

قانونی ماہرین کی رائے کی روشنی میں حکمت عملی ترتیب دی جا رہی ہے، کوئی بھی قانونی یا آئینی اقدام کرنے سے قبل وزیراعلیٰ سندھ قائم علی شاہ وزیراعظم نواز شریف کی وطن واپسی کا انتظار کریں گے۔ دریں اثنا ایڈووکیٹ جنرل سندھ عبدالفتاح ملک نے کہا ہے کہ انھوں نے اس سلسلے میں وزیراعلیٰ سندھ کو اپنی قانونی رائے دیدی ہے۔ انھوں نے میڈیا کو بتایا کہ سندھ میں صوبے کے چیف ایگزیکٹو کے احکام پر عمل نہ ہونے سے بڑا انتظامی اور آئینی بحران پیدا ہو سکتا ہے، اس طرح کی صورتحال سابق آئی جی پولیس اقبال محمود کے تبادلے کے معاملے پر بھی پیدا ہوئی تھی، لیکن بعد میں وہ مسئلہ حل ہوگیا تھا۔ واضح رہے کہ وزیراعلیٰ سندھ قائم علی شاہ نے گذشتہ منگل کو سجاد سلیم ہوتیانہ کی خدمات وفاق کو واپس کرنے اور چیف سیکریٹری سندھ کا اضافی چارج وزیراعلیٰ انسپیکشن ٹیم کے چیئرمین عبدالسبحان میمن کے حوالے کرنے کے احکام جاری کئے تھے، لیکن ان پر عمل نہ ہو سکا اور سجاد سلیم ہوتیانہ نے بدستور چیف سیکریٹری سندھ کی حیثیت سے کام جاری رکھا ہوا ہے۔
خبر کا کوڈ : 445533
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب