0
Sunday 27 Sep 2015 23:45

مسلم لیگ (ن) نے ایک طویل عرصے بعد پھر سے سندھ پر توجہ دینا شروع کر دی

مسلم لیگ (ن) نے ایک طویل عرصے بعد پھر سے سندھ پر توجہ دینا شروع کر دی
اسلام ٹائمز۔ پاکستان پیپلز پارٹی کے ساتھ سیاسی فاصلے بڑھ جانے کے بعد حکمران جماعت مسلم لیگ (ن) نے ایک طویل عرصے بعد پھر سے سندھ پر توجہ دینا شروع کر دی ہے، اور مسلم لیگ (ن) کی اعلیٰ قیادت نے سندھ میں پارٹی کی تنظیم نو اور قد آور سیاسی شخصیات کو پارٹی میں شامل کرنے کی منصوبہ بندی کا آغاز کر دیا ہے۔ اطلاعات کے مطابق پیپلز پارٹی کے گزشتہ 5 سالہ دور حکومت اور پھر نواز لیگ کے موجودہ دور حکمرانی میں پی پی اور نواز لیگ کے درمیان نہ جانے وہ کون سی خفیہ اور درپردہ مفاہمت تھی، جس کی بناء پر نواز لیگ کی اعلیٰ قیادت نے ہمیشہ اپنی پارٹی سرگرمیوں کو سندھ کیلئے ایک ممنوعہ علاقہ تصور کیا، اور سندھ سے تعلق رکھنے والے پارٹی رہنماﺅں کے بار بار کے مطالبے اور اپیلوں کے باوجود، کبھی پارٹی کی تنظیم نو اور اسے سیاسی طور پر ایک فعال اور مضبوط سیاسی قوت بنانے کے کام میں دلچسپی نہیں ملی۔

لیکن جب سے سندھ میں بعض وفاقی اداروں کی جانب سے احتسابی عمل شروع ہوا ہے، پیپلز پارٹی کی اعلیٰ قیادت کے رویئے میں خاصی تلخی آگئی ہے۔ ابتداء میں تو نواز حکومت کی یہ کوشش تھی کہ پیپلز پارٹی کے ساتھ سیاسی تلخی میں مزید اضافہ نہ ہو، اور معاملات کو افہام وتفہیم کے ذریعے حل کرلیا جائے، لیکن پیپلز پارٹی کے شریک چیئرمین آصف علی زرداری کے بعد، ان کے صاحبزادے اور پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے پنجاب میں بیٹھ کر تخت لاہور کو للکارنا شروع کیا، اور نواز حکومت کے خلاف مفاہمتی پالیسی کے بجائے مزاحمتی پالیسی اختیار کرنے کا اعلان کیا، تو اس کے بعد نواز حکومت نے بھی پیپلز پارٹی اور سندھ کے حوالے سے اپنی سابقہ پالیسی پر نظر ثانی کرنے کا فیصلہ کیا ہے، سندھ میں (ن) لیگ کو مضبوط سیاسی قوت بنانے کا ٹاسک جام معشوق علی کے سپرد کردی گئی ہے۔
خبر کا کوڈ : 487710
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب