0
Tuesday 3 Nov 2015 18:44
امریکہ آج بھی ایران اسلامی کا سب سے بڑا دشمن ہے

امریکہ مردہ باد کا مطلب امریکی قوم مردہ باد نہیں بلکہ امریکی پالیسیاں اور سامراج مردہ باد ہے، سید علی خامنہ ای

امریکہ مردہ باد کا مطلب امریکی قوم مردہ باد نہیں بلکہ امریکی پالیسیاں اور سامراج مردہ باد ہے، سید علی خامنہ ای
اسلام ٹائمز۔ رہبر معظم انقلاب اسلامی آیت اللہ العظمٰی سید علی خامنہ ای نے امریکہ کو ایران کا سب سے بڑا دشمن قرار دیا ہے۔ تہران میں اسکولوں اور کالجوں کے طلبا کی بڑی تعداد نے منگل کو رہبر انقلاب اسلامی سے ملاقات کی۔ یہ ملاقات اسلامی انقلاب کی کامیابی کے بعد تہران میں امریکہ کے جاسوسی کے مرکز پر ایران کے انقلابی طلبا کے قبضے کی سالگرہ کی مناسبت سے انجام پائی۔ یاد رہے کہ چار نومبر انیس سو اناسی کو انقلابی طلبا نے تہران میں امریکہ کے سفارتخانے پر جو جاسوسی کے مرکز میں تبدیل ہوچکا تھا، قبضہ کر لیا تھا۔ ایران میں یہ دن ہر سال عالمی سامراج کے خلاف جدوجہد کے دن کے نام سے منایا جاتا ہے۔ یہ دن بدھ کو پورے ایران میں قومی جوش و جذبے کے ساتھ منایا جائے گا، لیکن ایران کے اسکولوں اور کالجوں کے طلبا نے اس مناسبت سے منگل کو ہی رہبر انقلاب اسلامی آيۃ اللہ العظمی سید علی خامنہ ای سے ملاقات کی۔ رہبر انقلاب اسلامی نے اس موقع پر اپنے خطاب میں کہا کہ امریکہ آج بھی ایران اسلامی کا سب سے بڑا دشمن ہے۔

انقلاب اسلامی کے سپریم لیڈر نے کہا کہ ایرانی قوم کا امریکہ مردہ باد کا نعرہ بہت ہی مستحکم اور عاقلانہ بنیاد پر استوار ہے۔ انہوں نے کہا کہ ظاہر ہے کہ اس نعرے کا مطلب امریکی قوم مردہ باد نہيں ہے۔ رہبر انقلاب اسلامی نے کہا کہ اس نعرے کا مطلب امریکی پالیسیاں مردہ باد اور سامراج مردہ باد ہے اور اس نعرے کی بنیاد عاقلانہ اور محکم ہے، جس کو ہر صاحب عقل قوم سمجھتی ہے۔ آیت اللہ العظمٰی سید علی خامنہ ای نے اپنے خطاب میں کہا کہ سامراج کے خلاف جدوجہد ایک معقول اور خردمندانہ تحریک ہے، جو سائینٹیفک بنیادوں اور ایرانی قوم کے تجربات پر استوار ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ امریکہ نے حالیہ برسوں میں یہ کام کیا ہے اور کچھ لوگوں کو اس کام پر لگایا ہے کہ وہ یہ ظاہر کریں کہ امریکہ کل تک دشمن تھا لیکن آج دشمن نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ امریکہ اس طرح ایرانی قوم سے اپنی دشمنی کو چھپانا چاہتا ہے، تاکہ دھوکے سے اس قوم پر وار کرسکے۔

رہبر انقلاب اسلامی نے مصدق کی تحریک کی ناکامی کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ مصدق کی غلطی یہ تھی کہ انہوں نے تیل کی دولت اور صنعت کو قومی تحویل ميں لینے کے بعد امریکہ پر اعتماد کر لیا اور امریکہ نے ان کی خوش فہمی اور سادہ لوحی سے فائدہ اٹھا کر ان کے خلاف بغاوت کروا دی اور ان کی حکومت کا تختہ الٹ دیا۔ رہبر انقلاب اسلامی آیت اللہ العظمٰی خامنہ ای نے اپنے خطاب میں طلبا کو نصیحت کی کہ امریکی جاسوسی کے اڈے پر قبضے کے واقعے سے سبق حاصل کریں اور جو دستاویزات وہاں سے برآمد ہوئیں، ان کا مطالعہ کریں۔ انہوں نے کہا کہ یہ دستاویزات ثابت کرتی ہیں کہ اسلامی انقلاب کی کامیابی کے عروج کے زمانے میں امریکی، اسلامی جمہوریہ ایران کے خلاف کس طرح کی سازش میں مصروف تھے، امریکہ کی حقیقت یہ ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ امریکی، مذاکرات میں خود کو جنگ کا مخالف ظاہر کرنے کے لئے کیمرے کے سامنے آکر آنسو بہاتے ہیں، یہ وہی ہیں کہ جب صیہونی حکومت نے غزہ میں سینکڑوں بچوں کو ٹکڑے ٹکڑے کر دیا اور آج بھی غرب اردن میں دوسری شکل میں حملے کر رہی تو ان کی پیشانی پر شکن تک نہیں آرہی۔ اس حالت میں کیمرے کے سامنے ان کے رونے پر کیسے یقین کر لیا جائے؟
خبر کا کوڈ : 495494
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب