0
Sunday 24 Jan 2016 20:30

امریکی بحریہ کے اہلکاروں کی گرفتاری بروقت، دلیرانہ اور ایمان پر مبنی اقدام تھا، سید علی خامنہ ای

امریکی بحریہ کے اہلکاروں کی گرفتاری بروقت، دلیرانہ اور ایمان پر مبنی اقدام تھا، سید علی خامنہ ای
اسلام ٹائمز۔ رہبر انقلاب اسلامی آیت اللہ العظمٰی سید علی خامنہ ای نے ایران کی سمندری حدود میں داخل ہونے کے بعد امریکی بحریہ کے فوجی اہلکاروں کو گرفتار کر لینے کے پاسداران انقلاب اسلامی کے سپاہیوں کے اقدام کو بروقت اور دلیرانہ قرار دیا ہے۔ سپاہ پاسداران انقلاب اسلامی کے بحری شعبے کے ان سپاہیوں نے، جنہوں نے حال ہی میں خلیج فارس میں غیر قانونی طور پر اسلامی جمہوری ایران کی سمندری حدود میں داخل ہونے والے امریکی فوجیوں کو گرفتار کرلیا تھا، اتوار کو رہبر انقلاب اسلامی آیت اللہ العظمی سید علی خامنہ ای سے ملاقات کی۔ رہبر انقلاب اسلامی نے اس موقع پر، سپاہ پاسداران انقلاب اسلامی کے سپاہیوں کی قدردانی کرتے ہوئے کہا کہ خلیج فارس میں ایران کی سمندری حدود میں غیر قانونی طور پر داخل ہونے والے امریکی بحریہ کے فوجیوں کے حوالے سے اٹھایا جانے والا قدم بروقت، دلیرانہ اور ایمان پر استوار تھا، انہوں نے کہا کہ درحقیقت اس کو خدا کا کام سمجھنا چاہئے، جو امریکی فوجیوں کو ہماری سمندری حدود میں کھینچ کے لایا، تاکہ آپ کے بروقت اقدام کے نتیجے میں وہ اس طرح گرفتار کئے جائیں کہ وہ اپنے ہاتھ سروں پر رکھے ہوئے ہوں۔ یاد رہے کہ 12 جنوری دو ہزار سولہ کو امریکی بحریہ کی دو جنگی کشتیاں خلیج فارس میں ایران کی سمندری حدود میں داخل ہوگئیں، جنہیں پاسداران انقلاب اسلامی کے بحری شعبے کے سپاہیوں نے روک لیا۔ ان جنگی کشتیوں میں امریکی بحریہ کے دس فوجی موجود تھے، جنہیں گرفتار کرلیا گیا اور جب یہ ثابت ہوگیا کہ امریکی بحریہ کے یہ فوجی دانستہ نہیں بلکہ غلطی سے ایران کی سمندری حدود میں داخل ہوگئے تھے اور اسی کے ساتھ انھوں نے اپنی غلطی کا اعتراف کرتے ہوئے معافی بھی مانگ لی تو انہیں رہا کر دیا گیا۔
خبر کا کوڈ : 514970
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب
ہماری پیشکش