0
Saturday 25 Jun 2016 19:37

اگر مجالس اور جلوسوں کو روکنے کی ناپاک کوشش کی گئی تو یوم علی کے جلوسوں کو احتجاج میں بدل دیں گے، علامہ اقتدار نقوی

اگر مجالس اور جلوسوں کو روکنے کی ناپاک کوشش کی گئی تو یوم علی کے جلوسوں کو احتجاج میں بدل دیں گے، علامہ اقتدار نقوی
اسلام ٹائمز۔ مجلس وحدت مسلمین جنوبی پنجاب کے صوبائی سیکرٹری جنرل علامہ اقتدار حسین پنجاب حکومت سے جنوبی پنجاب میں یوم حضرت علی علیہ السلام کے موقع پر سیکیورٹی کے فول پروف انتظامات کا مطالبہ کیا ہے۔ ان خیالات کا اظہار اُنہوں نے ملتان میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر علامہ سید سلطان احمد نقوی، علامہ قاضی نادر حسین علوی اور مولانا عمران ظفر موجود تھے۔ علامہ اقتدار حسین نقوی نے جنوبی پنجاب میں سیکیورٹی انتظامات پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ شہادت حضرت علی علیہ السلام کے موقع پر منعقد ہونے والی مجالس عزاء اور جلوسوں غیرمعمولی سیکیورٹی دی جائے، اُنہوں نے کہا کہ جنوبی پنجاب میں دو سو سے زائد مجالس اور چھوٹے بڑے جلوس نکالے جائیں گے، مختلف اضلاع میں انتظامیہ عزاداروں کے خلاف مذموم کاروائیوں میں مصروف ہے، ہم ملتان، مظفرگڑھ، خانیوال، راجن پور، لیہ اور بھکر کی انتظامیہ کو متنبہ کرتے ہیں کہ یوم علی کے موقع پر عزاداروں کے جلوس اور مجالس میں کسی قسم کی کوئی رُکاوٹ پیدا نہ کی جائے وگرنہ عید کے پوری قوم سڑکوں پر نکل کر ان ظالموں کا بوریا بستر گول کر دے گی۔ علامہ اقتدار نقوی کا مزید کہنا تھا کہ جنوبی پنجاب میں مقامی انتظامیہ عزاداروں کے خلاف بے بنیاد مقدمات قائم کر رہی ہے پنجاب حکومت دہشت گردوں کی سرپرستی اور بے گناہ لوگوں پر مقدمے بنارہی ہے، بعض علاقوں میں پنجاب پولیس عزاداری کو محدود کرنے کے ناپاک عزائم رکھتے ہیں اگر جنوبی پنجاب کے کسی بھی شہر میں جلوس ہائے عزاء یا مجالس کو روکا گیا تو یوم علی کے موقع پر دھرنے دیے جائیں گے۔ اس موقع پر علامہ اقتدار نقوی پنجاب حکومت نے جنوبی پنجاب میں موجود شیعہ عمائدین اورشخصیات کو سیکیورٹی فراہم کرنے کا مطالبہ کیا۔ اُنہوں نے کہا کہ سیکیورٹی ادارے ہمیں غیر محفوظ قراردے رہے ہیں لیکن حکومت ہمیں تحفظ دینے کی بجائے ہراساں کر رہی ہے۔
خبر کا کوڈ : 548607
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب
ہماری پیشکش