0
Saturday 8 Oct 2016 14:31

کراچی سمیت سندھ بھر اب بھی دہشتگردی کا خطرہ موجود ہے، آئی جی سندھ

کراچی سمیت سندھ بھر اب بھی دہشتگردی کا خطرہ موجود ہے، آئی جی سندھ
اسلام ٹائمز۔ آئی جی سندھ اے ڈی خواجہ کا کہنا ہے کہ عزیزآباد سے پکڑا گیا اسلحہ اور گولہ بارود خانہ جنگی میں استعمال کیا جانا تھا۔ کراچی میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے آئی جی سندھ اے ڈی خواجہ کا کہنا تھا کہ کراچی عزیزآباد سے پکڑا جانے والا اسلحہ اور گولہ بارود دہشت گردوں کو خانہ جنگی میں استعمال کرنا تھا، جبکہ نواب شاہ سے ملنے والا اسلحہ محرم الحرام میں استعمال ہونا تھا، کراچی، حیدرآباد، خیرپور، نواب شاہ، جیکب آباد ،لاڑکانہ اور شکارپور میں اب بھی دہشت گردی کا خطرہ موجود ہے۔ آئی جی سندھ نے کہا کہ ملک دشمن عناصر فرقہ واریت کو ہوا دینے کی کوشش کریں گے، اسی لئے کوئٹہ واقعے کے بعد گزشتہ روز کراچی میں بھی فائرنگ کے فرقہ وارنہ واقعات ہوئے ہیں۔ آئی جی سندھ نے کہا کہ دہشت گردی کے خدشات کے پیش نظر محرم الحرام میں سیکیورٹی کے بھرپور انتظامات کئے گئے ہیں، موٹر سائیکل کی ڈبل سواری پر پابندی حالات کے باعث جلدی لگائی گئی، محرم سمیت دیگر بڑے مواقعوں پر ڈبل سواری پر پابندی سے فائدہ ہوتا ہے، کیونکہ شہر قائد اور سندھ کے دیگر شہروں میں ہونے والی زیادہ ٹارگٹ کلنگ میں موٹر سائیکل کا استعمال کیا گیا، دہشت گردوں نے قانون نافذ کرنے والے اہلکاروں، مذہبی اور سیاسی رہنماؤں کو بھی ہدف بنانے کیلئے موٹرسائیکل کا استعمال کیا ہے۔
خبر کا کوڈ : 573742
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے