0
Friday 14 Oct 2016 17:41

کراچی کے تاجروں نے حکومت سندھ کا دکانیں 7 بجے بند کرنے کا فیصلہ مسترد کردیا

کراچی کے تاجروں نے حکومت سندھ کا دکانیں 7 بجے بند کرنے کا فیصلہ مسترد کردیا
اسلام ٹائمز۔ تاجروں نے حکومت سندھ کی جانب سے دکانیں 7 بجے بند کرنے کے فیصلے کو مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ دکانیں جلد بند کرانے سے پہلے کچرے اور اسٹریٹ کرائم کا خاتمہ، ٹوٹی پھوٹی سڑکوں کی مرمت کی جائے۔ اس ضمن میں کراچی تاجر اتحاد کے چیئرمین عتیق میر نے میڈیا سے بات چیت میں کہا کہ حکومتی احکامات پر عملدرآمد ممکن نہیں ہے، ایسے کسی بھی فیصلے کو قابل عمل بنانے کے لیے کاروباری طبقے سے مشاورت ضروری ہے، کاروبار زبردستی بند کرانے کی کوشش کی گئی تو مزاحمت کریں گے، گرمیوں کے دنوں میں بازار 9 بجے تک کھلے ہونے چاہیئں، شہر میں عموما موسم گرم رہتا ہے اور شہری ٹھنڈے موسم میں شاپنگ کرتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ گاہگ دفاتر بند ہونے کے بعد بازار آتے ہیں اور دیر سے آنے والوں کے لیے بازار دیر تک کھلے رکھے جاتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کو اسٹیک ہولڈرز سے مشورہ کرنا چاہئے تھا، ماضی میں بھی کئی بار ایسے فیصلے ناکام ہوچکے ہیں۔ عتیق میر نے کہا کہ اس صورت میں اگر فیصلے کی حمایت کریں گے تو تاجر ہمارے ہی خلاف اٹھ کھڑے ہوں گے لہذا صورتحال کا مکمل جائزہ لینے کے بعد حکومت کو فیصلہ لینا چاہیے تھا۔ انہوں نے کہا کہ حکومت پہلے 10 بجے شادی ہالز بند کرا کر دکھائیں۔
خبر کا کوڈ : 575342
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب