0
Saturday 11 Mar 2017 11:39

سندھ میں بسنے والے ڈیڑھ کروڑ شیعہ صوبے کی پارلیمانی قوت بن سکتے ہیں، علامہ مقصود ڈومکی

سندھ میں بسنے والے ڈیڑھ کروڑ شیعہ صوبے کی پارلیمانی قوت بن سکتے ہیں، علامہ مقصود ڈومکی
اسلام ٹائمز۔ مجلس وحدت مسلمین پاکستان سندھ کے سیکرٹری جنرل علامہ مقصود علی ڈومکی نے ضلع شکارپور کا دورہ کیا۔ کربلا معلیٰ امام بارگاہ شکارپور میں عوامی کے اجتماع سے خطاب کیا اور گوٹھ چانڈیو میں مجلس وحدت مسلمین کے زیر اہتمام زیرتعمیر مسجد کے تعمیراتی کام کا جائزہ لیا۔ اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے علامہ مقصود علی ڈومکی نے کہا کہ شکارپور سمیت سندھ بھر میں دہشت گردی کے اڈے اور ٹریننگ کیمپس، خطرناک مستقبل کی نشاندہی کرتے ہیں۔ پیپلزپارٹی سے وابستہ صوبائی حکمران عوامی مسائل سے لاتعلق ہوکر دونوں ہاتھوں سے قومی دولت لوٹنے میں مصروف ہیں۔ شہداء کمیٹی سے کئے گئے وعدوں پر عمل درآمد ہوا نہ ہی سانحہ سہون شریف کے زخمیوں کا صحیح علاج معالجہ کیا جارہا ہے۔ ایک ماہ کا طویل عرصہ گذر جانے کے باوجود سانحہ سیہون کے مجرم بے نقاب ہوئے اور نہ ہی دہشت گردی میں ملوث عناصر کو نشان عبرت بنایا گیا۔

ان کا کہنا تھا کہ سندھ کے بعض اضلاع میں پیپلزپارٹی کے وڈیروں کی انتقامی کاروائیاں جاری ہیں۔ انہوں نے کہا کہ سیاسی طور پر کمزور قوم دشمن کی سازشوں کا مقابلہ نہیں کر سکتی، سندھ میں بسنے والے ڈیڑھ کروڑ شیعہ صوبے کی پارلیمانی قوت بن سکتے ہیں، اس محاذ پر بھی مجلس وحدت مسلمین قوم کی رہنمائی کرے گی۔ ان شاء اللہ قوم کے تعاون اور کارکنوں کی جدوجہد سے ہم مجلس کو پارلیمانی جماعت بنائیں گے۔ آئندہ انتخابات سے قبل قوم کی نمائندہ جماعت کی حیثیت سے وسیع تر مشاورت کا عمل شروع کریں گے۔
خبر کا کوڈ : 617045
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب
ہماری پیشکش