0
Tuesday 12 Sep 2017 22:45

افغانستان میں دیرپا امن خطے کی سلامتی کیلئے ناگزیز ہے، پاکستان اور ترکی کا اتفاق

افغانستان میں دیرپا امن خطے کی سلامتی کیلئے ناگزیز ہے، پاکستان اور ترکی کا اتفاق
اسلام ٹائمز۔ پاکستان اور ترکی نے افغانستان میں دیرپا امن خطے کی سلامتی کیلئے ناگزیز قرار دیدیا۔ وزیر خارجہ خواجہ آصف کی ترک قیادت سے ملاقاتوں میں دونوں جانب سے افغانستان میں امن کیلئے کوششیں جاری رکھنے پر اتفاق کیا گیا۔ وزیر خارجہ خواجہ آصف نے دورہ انقرہ میں ترک صدر رجب طیب اردوان، وزیراعظم بن علی یلدرم اور اپنے ہم منصب سے ملاقاتیں کیں۔ اس موقع پر وزیر خارجہ خواجہ آصف کا کہنا تھا کہ پاکستان ترکی کے ساتھ اسٹریٹجک، سیاسی، معاشی اور دفاعی تعلقات بڑھانا چاہتا ہے۔ ترک صدر کا کہنا تھا کہ ترکی دونوں ملکوں کے درمیان تعلقات کو مزید فروغ دینا چاہتا ہے۔ ترک وزیر خارجہ کا کہنا تھا کہ افغانستان کے مسئلے کا کوئی فوجی حل ممکن نہیں، دونوں ملکوں نے مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں اور مظالم پر شدید تحفظات کا اظہار کیا۔ خواجہ آصف نے مسئلہ کشمیر پر اصولی موقف اور حمایت پر ترکی کا شکریہ ادا کیا۔ دونوں ملکوں نے میانمار میں روہنگیا مسلمانوں پر مظالم پر بھی اظہار تشویش کیا اور مطالبہ کیا کہ عالمی برادری روہنگیا مسلمانوں پر مظالم رکوانے کیلئے اقدامات کرے۔

دیگر ذرائع کے مطابق وزیر خارجہ خواجہ آصف نے ترکی کے ایک روزہ دورے میں صدر رجب طیب اردوگان، وزیراعظم بن علی یلدرم اور وزیر خارجہ میولت کاؤس اوغلو سے ملاقاتیں کیں، جہاں دوطرفہ تعلقات سمیت خطے کے امن و استحکام کے لئے مشترکہ کوششوں کا اعادہ کیا گیا۔ خواجہ آصف نے ترک صدر سے ملاقات کے دوران دو طرفہ برادرانہ تعلقات سمیت سیاسی، معاشی، دفاعی اور عوامی رابطوں کو مزید مضبوط بنانے کے عزم کو دہرایا۔ اردوگان نے بھی دونوں ملکوں کے درمیان برادرانہ تعلقات کو مزید وسعت دینے کا عزم کرتے ہوئے دونوں ملکوں کے درمیان اعلٰی سطح پر تبادلہ خیال پر اتفاق کیا۔ ملاقات کے دوران افغانستان میں دیرپا امن کو خطے کے استحکام کے لئے ضروری قرار دیا اور افغانستان میں امن و استحکام کے لئے پاکستان اور ترکی کا مشترکہ جدوجہد کرنے پر اتفاق کیا گیا۔ وزیر خارجہ نے اس سے قبل ترک وزیراعظم بن علی یلدرم سے ملاقات کی اور اس دوران اسٹریٹجک شراکت داری پر بے مثال بہتری پر اطمینان ظاہر کیا گیا۔

ترک وزیر خارجہ اور خواجہ آصف نے بھی افغانستان کے حوالے سے حالیہ صورت حال کو پیش نظر رکھتے ہوئے باہمی تعاون اور خطے میں سلامتی کے معاملات پر بحث کی۔ دونوں وزرائے خارجہ نے اس بات پر اتفاق کیا کہ افغانستان کا حل عسکری نہیں بلکہ سیاسی ہے۔ انہوں نے افغانستان کے مسائل کے حل کے لئے افغانستان کی سربراہی میں سیاسی اور پرامن اقدامات میں پڑوسی ممالک کی مشترکہ کوششوں پر زور دیا۔ ملاقات کے دوران میانمار میں روہنگیا مسلمانوں اور مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی پامالی پر بھی بات کی گئی اور اس پر تشویش کا اظہار کیا گیا۔ خواجہ آصف نے کشمیریوں کی اصولی جدوجہد اور حق خود ارادیت کی حمایت پر ترکی کا شکریہ ادا کیا۔ وزیر خاجہ نے روہنگیا مسلمانوں کے معاملے پر ترکی کے قائدانہ کردار پر خراج تحسین پیش کیا جبکہ دونوں رہنماؤں نے عالمی برادری پر زور دیا کہ وہ میانمار کے متاثرین کی انسانی ہمدردی کی بنیاد پر تعاون کو مزید بڑھائے۔
خبر کا کوڈ : 668595
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب