0
Friday 23 Feb 2018 21:35

ادارے خودمختار اور آئین کے دائرے میں کام کرینگے تو ملک مستحکم ہوگا، ثروت اعجاز قادری

ادارے خودمختار اور آئین کے دائرے میں کام کرینگے تو ملک مستحکم ہوگا، ثروت اعجاز قادری
اسلام ٹائمز۔ پاکستان سنی تحریک کے سربراہ محمد ثروت اعجاز قادری نے کہا ہے کہ موجودہ حکمران عوام کے مسائل حل نہیں کرنا چاہتے، سرکاری اسپتالوں کا نظام وڈیرانہ ہو چکا ہے، سرکاری اسکولوں میں تعلیم کا معیار گرتا جا رہا ہے، عوام کو بہتر تعلیم اور صحت سے محروم رکھنا آئین کی کھلی خلاف ورزی ہے، تعلیم اور صحت کے نظام امیر اور غریب کیلئے یکساں بنانا ہوگا، حکومت غریب کو ختم کرنے کی بجائے غربت کے خاتمے کیلئے کام کرے، اچھی تعلیم، صحت اور سستا انصاف مستقبل کی ترقی کی ضمانت ہے، بے روزگاری اور مہنگائی کے خاتمے کیلئے میڈان پاکستان پالیسیاں مرتب کرنا ہونگی، ادارے خود مختار ہونگے اور آئین کے دائرے میں کام کرینگے تو ملک مستحکم ہوگا، ان خیالات کا اظہار انہوں نے کراچی میں مرکز اہلسنت پر بلدیہ ٹاؤن سے آئے ہوئے معززین کے وفد سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ ثروت اعجاز قادری نے کہا کہ کرپشن چھپانے والوں کی پکڑ کرنا ہوگی، ملک کی دولت لوٹنے والوں نے ملک کا دیوالیہ نکال دیا ہے، عدلیہ کے فیصلوں کو تنقید کا نشانہ بنا کر حقائق کو نہیں چھپایا جا سکتا، اداروں کا احترام کرنے والے ہی آئین کی بالادستی کے ضامن ہو سکتے ہیں۔

ثروت اعجاز قادری نے کہا کہ جمہوری معاشروں میں عوام کو بنیادی حقوق کے ساتھ مکمل سماجی تحفظ بھی فراہم کیا جاتا ہے، پاکستان میں سماجی تحفظ کا اب تک کوئی مؤثر نظام موجود نہیں، جس کی وجہ سے معاشرے میں عدم استحکام کا احساس عام ہو رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ جمہوریت مایوسیوں کو ختم خوشحالی و ترقی کو پروان چڑھاتی ہے، مگر اس کے برعکس عوام آج بھی بے روزگاری کا شکار ہیں، غربت کے خاتمے کیلئے کسی بھی حکومت نے خاطر خواہ اقدامات نہیں کئے، ہر دور میں مہنگائی آسمان کو چھوتی رہی اور آج مہنگائی بام عروج پر ہے، ایک طرف بے روزگاری اور دوسری طرف بڑھتی ہوئی مہنگائی نے غریب سے آخری نوالہ تک چھین لیا۔ ثروت اعجاز قادری نے کہا کہ حکومت غریبوں کو ریلیف فراہم کرنے کیلئے ہر ممکن اقدامات کرے، غریب عوام کیلئے تعلیم، اسپتالوں میں مفت یا سستا علاج اور غریبوں کو اجناس مہیا کرنا حکومت ترجیحات میں شامل کرے۔




اسلام ٹائمز۔ پاکستان سنی تحریک کے سربراہ محمد ثروت اعجاز قادری نے کہا ہے کہ موجودہ حکمران عوام کے مسائل حل نہیں کرنا چاہتے، سرکاری اسپتالوں کا نظام وڈیرانہ ہو چکا ہے، سرکاری اسکولوں میں تعلیم کا معیار گرتا جا رہا ہے، عوام کو بہتر تعلیم اور صحت سے محروم رکھنا آئین کی کھلی خلاف ورزی ہے، تعلیم اور صحت کے نظام امیر اور غریب کیلئے یکساں بنانا ہوگا، حکومت غریب کو ختم کرنے کی بجائے غربت کے خاتمے کیلئے کام کرے، اچھی تعلیم، صحت اور سستا انصاف مستقبل کی ترقی کی ضمانت ہے، بے روزگاری اور مہنگائی کے خاتمے کیلئے میڈان پاکستان پالیسیاں مرتب کرنا ہونگی، ادارے خودمختار ہونگے اور آئین کے دائرے میں کام کرینگے تو ملک مستحکم ہوگا، ان خیالات کا اظہار انہوں نے کراچی میں مرکز اہلسنت پر بلدیہ ٹاؤن سے آئے ہوئے معززین کے وفد سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ ثروت اعجاز قادری نے کہا کہ کرپشن چھپانے والوں کی پکڑ کرنا ہوگی، ملک کی دولت لوٹنے والوں نے ملک کا دیوالیہ نکال دیا ہے، عدلیہ کے فیصلوں کو تنقید کا نشانہ بنا کر حقائق کو نہیں چھپایا جا سکتا، اداروں کا احترام کرنے والے ہی آئین کی بالادستی کے ضامن ہو سکتے ہیں۔

ثروت اعجاز قادری نے کہا کہ جمہوری معاشروں میں عوام کو بنیادی حقوق کے ساتھ مکمل سماجی تحفظ بھی فراہم کیا جاتا ہے، پاکستان میں سماجی تحفظ کا اب تک کوئی مؤثر نظام موجود نہیں، جس کی وجہ سے معاشرے میں عدم استحکام کا احساس عام ہو رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ جمہوریت مایوسیوں کو ختم خوشحالی و ترقی کو پروان چڑھاتی ہے، مگر اس کے برعکس عوام آج بھی بے روزگاری کا شکار ہیں، غربت کے خاتمے کیلئے کسی بھی حکومت نے خاطر خواہ اقدامات نہیں کئے، ہر دور میں مہنگائی آسمان کو چھوتی رہی اور آج مہنگائی بام عروج پر ہے، ایک طرف بے روزگاری اور دوسری طرف بڑھتی ہوئی مہنگائی نے غریب سے آخری نوالہ تک چھین لیا۔ ثروت اعجاز قادری نے کہا کہ حکومت غریبوں کو ریلیف فراہم کرنے کیلئے ہر ممکن اقدامات کرے، غریب عوام کیلئے تعلیم، اسپتالوں میں مفت یا سستا علاج اور غریبوں کو اجناس مہیا کرنا حکومت ترجیحات میں شامل کرے۔

اسلام ٹائمز۔ پاکستان سنی تحریک کے سربراہ محمد ثروت اعجاز قادری نے کہا ہے کہ موجودہ حکمران عوام کے مسائل حل نہیں کرنا چاہتے، سرکاری اسپتالوں کا نظام وڈیرانہ ہو چکا ہے، سرکاری اسکولوں میں تعلیم کا معیار گرتا جا رہا ہے، عوام کو بہتر تعلیم اور صحت سے محروم رکھنا آئین کی کھلی خلاف ورزی ہے، تعلیم اور صحت کے نظام امیر اور غریب کیلئے یکساں بنانا ہوگا، حکومت غریب کو ختم کرنے کی بجائے غربت کے خاتمے کیلئے کام کرے، اچھی تعلیم، صحت اور سستا انصاف مستقبل کی ترقی کی ضمانت ہے، بے روزگاری اور مہنگائی کے خاتمے کیلئے میڈان پاکستان پالیسیاں مرتب کرنا ہونگی، ادارے خود مختار ہونگے اور آئین کے دائرے میں کام کرینگے تو ملک مستحکم ہوگا، ان خیالات کا اظہار انہوں نے کراچی میں مرکز اہلسنت پر بلدیہ ٹاؤن سے آئے ہوئے معززین کے وفد سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ ثروت اعجاز قادری نے کہا کہ کرپشن چھپانے والوں کی پکڑ کرنا ہوگی، ملک کی دولت لوٹنے والوں نے ملک کا دیوالیہ نکال دیا ہے، عدلیہ کے فیصلوں کو تنقید کا نشانہ بنا کر حقائق کو نہیں چھپایا جا سکتا، اداروں کا احترام کرنے والے ہی آئین کی بالادستی کے ضامن ہو سکتے ہیں۔

ثروت اعجاز قادری نے کہا کہ جمہوری معاشروں میں عوام کو بنیادی حقوق کے ساتھ مکمل سماجی تحفظ بھی فراہم کیا جاتا ہے، پاکستان میں سماجی تحفظ کا اب تک کوئی مؤثر نظام موجود نہیں، جس کی وجہ سے معاشرے میں عدم استحکام کا احساس عام ہو رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ جمہوریت مایوسیوں کو ختم خوشحالی و ترقی کو پروان چڑھاتی ہے، مگر اس کے برعکس عوام آج بھی بے روزگاری کا شکار ہیں، غربت کے خاتمے کیلئے کسی بھی حکومت نے خاطر خواہ اقدامات نہیں کئے، ہر دور میں مہنگائی آسمان کو چھوتی رہی اور آج مہنگائی بام عروج پر ہے، ایک طرف بے روزگاری اور دوسری طرف بڑھتی ہوئی مہنگائی نے غریب سے آخری نوالہ تک چھین لیا۔ ثروت اعجاز قادری نے کہا کہ حکومت غریبوں کو ریلیف فراہم کرنے کیلئے ہر ممکن اقدامات کرے، غریب عوام کیلئے تعلیم، اسپتالوں میں مفت یا سستا علاج اور غریبوں کو اجناس مہیا کرنا حکومت ترجیحات میں شامل کرے۔
خبر کا کوڈ : 707017
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب
ہماری پیشکش