0
Thursday 22 Mar 2018 19:41

سانحہ ماڈل ٹاؤن کے انصاف کیلئے انتہائی صبر و تحمل کے ساتھ عدلیہ کی طرف دیکھ رہے ہیں، خرم نواز گنڈاپور

سانحہ ماڈل ٹاؤن کے انصاف کیلئے انتہائی صبر و تحمل کے ساتھ عدلیہ کی طرف دیکھ رہے ہیں، خرم نواز گنڈاپور
اسلام ٹائمز۔ پاکستان عوامی تحریک کے سیکرٹری جنرل خرم نواز گنڈاپور نے کہا ہے کہ پنجاب حکومت ماڈل ٹاؤن کیس میں اس وقت کے ڈی آئی جی آپریشن رانا عبدالجبار کو انسداد دہشتگردی کی عدالت میں پیش کرے جو مسلسل مفرور ہیں، سابق آئی جی مشتاق سکھیرا جو سٹے آرڈر کے پیچھے چھپے ہوئے ہیں انسداد دہشتگردی کی عدالت میں پیش ہوں۔ انہوں نے کہا کہ راؤ انوار نے گرفتاری دے دی، پنجاب پولیس کے راؤ انوار کب کٹہرے میں لائے جائیں گے؟ وہ مرکزی سیکرٹریٹ لاہور میں پارٹی عہدیداروں سے گفتگو کر رہے تھے۔ خرم نواز گنڈاپور نے کہا کہ شہباز شریف ہر کیس میں خود کو پیش کرنے کی بات کرتے ہیں مگر سانحہ ماڈل ٹاؤن کے قتل عام کا ذکر نہیں کرتے، ہماری چیف جسٹس آف پاکستان سے بار دگر درخواست ہے کہ وہ سانحہ ماڈل ٹاؤن کا بھی نوٹس لیں، سانحہ کی ازسرنو تحقیقات کروائی جائیں، کیونکہ جسٹس باقر نجفی کمیشن رپورٹ میں جو نئے حقائق سامنے آئے ہیں ان پر تحقیق ناگزیر ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس وقت انصاف کیلئے سب کی نظریں سپریم کورٹ پر ہیں۔ خرم نواز گنڈاپور نے کہا کہ سانحہ ماڈل ٹاؤن کے انصاف کیلئے انتہائی صبر و تحمل کیساتھ عدلیہ کی طرف دیکھ رہے ہیں، ہم کسی صورت قصاص کے مطالبے سے پیچھے نہیں ہٹیں گے، فی الوقت انصاف کیلئے پوری توجہ قانونی جدوجہد پر ہے، سانحہ ماڈل ٹاؤن پر پہلے دن سے ایک ہی موقف ہے خون کا بدلہ خون، دیت نہیں قصاص، شریف برادران اور رانا ثناء اللہ ماڈل ٹاؤن کیس میں سزائیں پائیں گے اور پھانسیاں چڑھیں گے۔ انہوں نے کہا کہ صوبے کی بدنصیبی ہے کہ 14 بیگناہوں کے قاتلوں میں سے ایک صوبے کا وزیراعلیٰ اور دوسرا وزیر قانون ہے۔ انہوں نے مزید کہاکہ چیف جسٹس شہدائے ماڈل ٹاؤن کو انصاف دلوانے کیلئے کردار ادا کریں، عوامی تحریک قاتلوں کیخلاف قانونی اور سیاسی جنگ لڑ رہی ہے جو انصاف کے حصول تک جاری رہے گی۔
خبر کا کوڈ : 713131
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب