0
Friday 31 Aug 2018 19:49
ایران اور پاکستان اٹوٹ تاریخی، مذہبی اور ثقافتی بندھن میں بندھے ہیں، عمران خان

ایرانی وزیر خارجہ کی وزیراعظم عمران خان سے ملاقات، ایرانی صدر کا خصوصی پیغام پہنچا دیا

ایرانی وزیر خارجہ کی وزیراعظم عمران خان سے ملاقات، ایرانی صدر کا خصوصی پیغام پہنچا دیا
اسلام ٹائمز۔ ایران کے وزیر خارجہ محمد جواد ظریف نے وزیراعظم عمران خان سے وزیراعظم ہاؤس میں ملاقات کی ہے اور ایرانی صدر کا خصوصی پیغام پہنچایا ہے، وزیراعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ ایران کے ساتھ تعلقات کو مزید مستحکم کرنے کے خواہاں ہیں۔ ترجمان وزیراعظم ہاؤس کے مطابق ملاقات کے دوران ایرانی وزیر خارجہ جواد ظریف نے عمران خان کو وزیراعظم کا منصب سنبھالنے پر مبارکباد دی اور ایرانی صدر کا ایشیائی کوآپریشن ڈائیلاگ کے حوالے سے پیغام وزیراعظم کو دیا۔ وزیراعظم عمران خان نے مسئلہ کشمیر پر پاکستان مؤقف کی حمایت کرنے پر ایرانی سپریم لیڈر سید علی خامنہ ای کا شکریہ ادا کیا۔ عمران خان کا کہنا تھا کہ دونوں ممالک دیرینہ ثقافتی اور تاریخی تعلقات کے حامل ہیں اور موجودہ حکومت ان کو مزید مستحکم کرنے کی خواہاں ہے، جبکہ دونوں ممالک خطے کی ترقی اور خوشحالی کیلئے بھی اپنا کردار ادا کرتے رہیں گے۔ انہوں نے ہالینڈ میں گستاخانہ خاکوں کو روکنے کے حوالے سے پاکستان کے کردار کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ ایسے اقدامات کے خلاف مسلم امہ کو مشترکہ مؤقف اپنانا ہوگا۔
ایران و پاکستان اٹوٹ بندھن میں جڑے ہیں، عمران خان
دیگر ذرائع کے مطابق وزیراعظم عمران خان نے ایران میں پاکستان کا جشن آزادی بھرپور انداز سے منانے پر ایرانی سپریم لیڈر کا شکریہ ادا کیا اور کہا کہ اسلام فوبیا کا مقابلہ کرنے کے لئے مسلمان ملکوں کو یک زبان ہونے کی ضرورت ہے۔ پاکستان کے دورے پر آئے ایرانی وزیر خارجہ جواد ظریف سے ملاقات میں عمران خان نے کشمیریوں کے حق خودارادیت کی جدوجہد کی حمایت پر ایرانی قیادت کا شکریہ ادا کیا۔ انہوں نے کہا کہ ایران اور پاکستان اٹوٹ تاریخی، مذہبی اور ثقافتی بندھن میں بندھے ہیں، دونوں ممالک باہمی تعلقات کو پختہ کریں گے، علاقے میں امن و استحکام کے لئے مل کر کام کریں گے۔ جواد ظریف نے وزارت عظمیٰ کا منصب سنبھالنے پر ایرانی عوام اور قیادت کی طرف سے عمران خان تک مبارک باد کا پیغام پہنچایا اور انہیں ایشیائی تعاون ڈائیلاگ سمٹ میں شرکت کا دعوت نامہ بھی دیا۔
 
اس موقع پر عمران خان نے ایرانی صدر روحانی سے اپنی ٹیلیفونک گفتگو کا حوالہ بھی دیا اور کہا کہ دونوں ملکوں کے عوام کے مفاد میں ایران کے ساتھ مختلف شعبوں میں تعلقات پختہ کریں گے۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ پاکستان اور ایران رابطے بڑھا کر خطے میں ترقی و خوشحالی کے لئے اہمیت رکھتے ہیں۔ ایرانی وزیر خارجہ سے ملاقات میں وزیراعظم نے پاکستان کی شدید مذمت اور احتجاج کے بعد گستاخانہ خاکوں کے مقابلے کی منسوخی کا حوالہ بھی دیا اور کہا کہ اسلام فوبیا کا مقابلہ کرنے کے لئے مسلمان ملکوں کو یک زبان ہونے کی ضرورت ہے، حضرت محمد صلی اللہ علیہ وسلم سے محبت اور احترام ہر مسلمان کے ایمان کا حصہ ہے۔ کسی کو بھی حضور صلی اللہ علیہ وسلم کی شان میں گستاخی کی اجازت نہیں دی جاسکتی۔
خبر کا کوڈ : 747270
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے