0
Sunday 25 Nov 2018 20:17

چینی سفارتخانے پر حملہ بلوچستان میں بے چینی کا مظہر ہے، حافظ حسین احمد

چینی سفارتخانے پر حملہ بلوچستان میں بے چینی کا مظہر ہے، حافظ حسین احمد
اسلام ٹائمز۔ جمعیت علمائے اسلام کے مرکزی ترجمان اور متحدہ مجلس عمل کی رابطہ کمیٹی کی چیئرمین حافظ حسین احمد نے کہا ہے کہ حکومت نے 100 دنوں کی بات پر یوٹرن لے کر دنوں کو 100 مہینوں میں تبدیل کردیا، چینی سفارتخانے پر حملہ بلوچستان میں بے چینی کا مظہر ہے، بلوچستان میں ’’باپ‘‘ کی حکومت سے ’’بیٹے ‘‘ مطمئن نہیں، ’’باپ‘‘ کی تبدیلی کے آثار نمایاں ہیں، ڈونلڈ ٹرمپ بھی یوٹرن اور غلطیوں میں عمران خان کا مقابلہ نہیں کرسکتے کیوں کہ عمران خان نے یوٹرن اور غلطیوں میں اچھے بھلے لوگوں کو پیچھے چھوڑ دیا ہے، فیصل واوڈا کی چینی سفارتخانے پر حملے کے وقت کمانڈو انٹری انگلی کٹا کر شہیدوں میں نام لکھوانا ہے، علیمہ خان این آر او کر چکی ہیں، این آر او اب متعدی مرض کے طور پر سیاسی عناصر کو اپنی لپیٹ میں لے رہا ہے۔ جیکب آباد کے صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے حافظ حسین احمد نے کہا کہ این آر او کے حوالے سے جو دعویٰ کیا جارہا ہے اس سے ثابت ہوتا ہے کہ کچھ کچھڑی ضرور پک رہی ہے اور ظاہر ہے کہ جو کچھڑی پکانے والوں کے قریب ہیں ان کو خوشبو آرہی ہے، اس لئے عمران خان بار بار این آر او کی بات کررہے ہیں، عمران خان این آر او دینے کے لئے اہل نہیں وہ صرف اطلاع دے رہے ہیں، این آر او دینے والے اور لینے والوں کو سب جانتے ہیں، اس وقت عمران خان کے قریبی ساتھی اور ان کی ہمشیرہ علیمہ خان این آر او سے مستفید ہورہے ہیں، این آر او اب متعدی مرض کے طور پر ایک بار پھر ماضی کی طرح سیاسی عناصر کو اپنی لپیٹ میں لے رہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ احتساب سب کے لئے ہوتا تو سب اس کی لپیٹ میں آتے لیکن اب احتساب کرنے والے فرمائشی احتساب کررہے ہیں، پورے ملک میں تجاوزات کے نام آپریشن ہورہا ہے اور سائن بورڈ بھی اتارے جارہے ہیں، مگر بنی گالہ محل کو چند پیسوں پر قانونی قرار دیا جاتا ہے، احتساب اور انصاف کے پیمانے مختلف ہیں۔ انہوں نے کہا کہ حکومت نے 100 دنوں کی بات پر یوٹرن لے لیا ہے، اب 100 دنوں کو 100 مہینوں میں تبدیل کردیا گیا ہے، اب کہتے ہیں کہ 100 دن کے بجائے 100 مہینوں میں ثمرات سامنے آئیں گے، حالانکہ 5 سال میں بھی صرف 60 مہینے ہوتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ چینی سفارتخانے پر حملہ بلوچستان میں بے چینی کا مظہر ہے، جنہوں نے ذمہ داری قبول کی ہے اس سے ثابت ہوا ہے کہ پورے ملک میں جو اس طرح کے واقعات ہورہے ہیں ان کی نوعیت الگ ہے، کے پی کے میں جو واقعات ہورہے ہیں ان کی وجوہات الگ اور چینی سفارتخانے پر جو کچھ ہوا ہے اس کی وجوہات الگ ہیں، بلوچستان میں ’’باپ ‘‘ کی حکومت کے باوجود اگر بلوچستان کے ’’بیٹے ‘‘مطمئن نہیں ہوتے تو لگتا ہے کہ بلوچستان میں’’باپ‘‘ کی تبدیلی کے آثار نمایاں ہیں۔ انہوں نے کہا کہ عمران خان یوٹرن لینے میں سب سے آگے ہیں، ڈونلڈ ٹرمپ بھی یوٹرن اور غلطیوں میں عمران خان کا مقابلہ نہیں کرسکتے۔ چینی سفارتخانے پر ہونے والے حملے کے بعد فیصل واوڈا کی انٹری کو ڈرامہ قرار دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ فیصل واوڈا انگلی کٹا کر شہیدوں میں نام لکھوانا چاہتے ہیں، مگر جو ان کی اصل ذمہ داری ہے اس سے غافل ہیں۔
خبر کا کوڈ : 763183
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب