0
Tuesday 19 Feb 2019 19:04

طاہر القادری کی 68ویں سالگرہ پر منہاج یونیورسٹی میں خصوصی تقریب

طاہر القادری کی 68ویں سالگرہ پر منہاج یونیورسٹی میں خصوصی تقریب
اسلام ٹائمز۔ قائد تحریک منہاج القرآن اور منہاج یونیورسٹی لاہور کے بانی و بورڈ آف گورنرز کے چیئرمین ڈاکٹر طاہر القادری کی 68ویں سالگرہ پر منہاج یونیورسٹی میں خصوصی تقریب منعقد ہوئی اور ان کی سالگرہ کا کیک کاٹا گیا، سالگرہ کی تقریب میں ڈاکٹر حسین محی الدین، ڈاکٹر محمد اسلم غوری، خرم نواز گنڈا پور، بریگیڈیئر ر اقبال احمد خاں، ڈاکٹر شاہد سرویا، کرنل (ر) محمد مبشر، بیرسٹر عامر حسن، میاں زاہد اسلام، جواد حامد، عدنان جاوید، شہزاد رسول، جی ایم ملک، سہیل احمد رضا، منہاج القرآن انٹرنیشنل کے میڈیا ڈائریکٹر نوراللہ صدیقی،راشد کلیامی، راجہ زاہد محمود، یونیورسٹی کے ڈینز، ہیڈ آف ڈیپارٹمنٹس اور سینئر کلاسز کے طلبا و طالبات نے بڑی تعداد میں شرکت کی۔ قومی کرکٹ ٹیم کے مایہ ناز اوپنر بیٹسمین اظہر علی نے ڈاکٹر طاہر القادری کی سالگرہ میں شرکت کی اور ان کی نوجوانوں کی کردار سازی کے حوالے سے بروئے کار لائی جانیوالی عالمگیر کاوشوں کو سراہا، اظہر علی کی سالگرہ بھی 19 فروری کو تھی اس پر یونیورسٹی کی طرف سے انہیں مبارکباد دی گئی۔

اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے ڈپٹی چیئرمین منہاج یونیورسٹی لاہور ڈاکٹر حسین محی الدین قادری نے کہا اتحاد سے طاقت اور طاقت سے منزل حاصل ہوتی ہے، طاقت وہ جوہر ہے جو انسان کو اس کی منزل کے قریب لے جاتی ہے، اس دنیا میں علم، کردار، اخلاص اور جہد مسلسل کامیابی کے زینے ہیں، اگر یہ اوصاف اجتماعی سطح پر معاشروں میں جمع ہو جائیں تو وہ معاشرے مثالی بن جاتے ہیں، قائداعظم نے مختلف مذاہب، مسالک اور سیاسی جماعتوں کو ایک جگہ جمع کر کے طاقت حاصل کی یہ اتحاد ان کی طاقت بنا اور پھر اس طاقت سے پاکستان کی منزل حاصل ہوئی۔ انہوں نے کہا کہ ڈاکٹر طاہرالقادری کا تعلق ایک متوسط گھرانے سے تھا، انہوں نے مذکورہ اوصاف کے ذریعے عالم اسلام کو علم و تحقیق کے بے مثال اداروں کا تحفہ دیا اور آج دنیا کے لاکھوں کروڑوں نفوس ان کی علمی تحقیق سے مستفید ہو رہے ہیں، ڈاکٹر طاہرالقادری نے ایک ہزار کتب تحریر کیں، 8 جلدوں پر مشتمل ان کے تالیف کردہ قرآنی انسائیکلو پیڈیا کی دنیا بھر میں پذیرائی ہو رہی ہے اور یہ قرآنی انسائیکلو پیڈیا اشاعت کے ایک ماہ کے اندر بیسٹ سیلر بک بن گیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ ڈاکٹر طاہر القادری وہ نابغہ روزگار دینی سکالر اور ریفارمر ہیں جن کا علمی تحقیقاتی کام ہر سطح کے بین الاقوامی معیار پر پورا اترتا ہے ،ان کے کام پر دنیا کی مختلف یونیورسٹیوں میں پی ایچ ڈیز ہو رہی ہیں اور پذیرائی ہو رہی ہے،ڈاکٹر طاہرالقادری کے علمی کام اور اسلام کے بیانیہ کودنیا کے ہر مذہب کے سکالرز، ان کے پیروکاروں اور ہر مزاج کے معاشروں کے سامنے فخر کے ساتھ پیش کیا جاسکتا ہے. دہشتگردی اور خود کش دھماکوں کیخلاف ان کے 6 سو صفحات پر مشتمل فتوے نے اسلام پر انتہا پسندی اور دہشتگردی کا داغ لگانے کی مذموم کوشش کرنے والوں کو ہمیشہ کے لیے خاموش کروا دیا اور انہیں اپنی غلط فہمی اور ناقص مطالعہ پر مبنی فکر پر نظرثانی پر مجبور کر دیا اس فتویٰ نے اسلام کے بارے ہر نوع کے منفی اور مذموم پراپیگنڈا کو جڑ سے اکھاڑ پھینکا۔
خبر کا کوڈ : 778824
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب