0
Friday 22 Feb 2019 16:16

بھارت دشمن اور ایران بھائی ہے، تعلقات کا موازنہ درست نہیں، جنرل آصف غفور

بھارت دشمن اور ایران بھائی ہے، تعلقات کا موازنہ درست نہیں، جنرل آصف غفور
اسلام ٹائمز۔ پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر)  کے سربراہ میجر جنرل  آصف غفور نے پریس کانفرنس کے دوران سوالوں کے جواب دیتے ہوئے کہا ہے کہ بھارت اور ایران کو ایک ساتھ  نہ ملایا جائے، ایران کے ساتھ ہمارے برادرانہ تعلقات ہیں، ایران ہمارا بھائی ہے، اسلامی اور ہمسایہ ملک ہے، جبکہ بھارت کے ساتھ ہماری جنگیں ہو چکی ہیں، ستر سالہ تاریخ میں جس طرح مخصمانہ تعلقات بھارت کے ساتھ رہے ہیں، ایران کیساتھ کبھی نہیں رہے، ہمارا ایران کے ساتھ 9009 کلو میٹر کا بارڈر ہے، اس پر بھی سیکیورٹی اتنی سخت نہیں ہے، ہم ایران کے ساتھ بات کر رہے ہیں، پاک ایران بارڈر پر بھی حفاظتی باڑ لگانے پر غور ہو رہا ہے، ایران کی سیاسی اور عسکری قیادت کے ساتھ رابطے میں ہیں۔ میجر جنرل آصف غفور نے کہا پاک افغان بارڈر پر 40 سال سے دہشتگردوں کی موجودگی تھی، پاک افغان بارڈر پر باڑ لگانے سے فائدہ ہورہا ہے، پاکستان، افغانستان اور ایران کے درمیان بہترین کوآرڈی نیشن ہے، ایران کیساتھ سرحد پر فینسنگ کیلئے بات چیت جاری ہے، ایران کیساتھ اچھے تعلقات ہیں، ایران کیساتھ بارڈر پر فوج تعینات کرنے کی ضرورت نہیں، کیونکہ کوئی تھریٹ نہیں ہے۔

سعودی ولی عہد کے دورہ پاکستان اور پاک بھارت کشیدگی میں ان کے کردار سے متعلق سوال کے جواب میں پاک فوج کے ترجمان کا کہنا تھا کہ یہ ٹھیک ہے کہ سعودی ولی عہد نے پاکستان میں سرمایہ کاری کی بات کی اور وزیراعظم کی طرف سے پاکستانی قیدیوں کی رہائی کیلئے درخواست پر خود کو پاکستان کا سفیر کہا، اس کا مطلب یہ نہیں کہ وہ اب ہر جگہ ایک سفیر کا کام کرینگے، وہ ایک دوستانہ تاثر تھا، اس سے زیادہ اسکا مطلب نہ لیں، ویسے بھی ممالک کے درمیان تعلقات اور شراکت اس حد تک گہری نہیں ہوتی کہ کوئی دوسرا ملک آپ کا نمائندہ بن جائے، بھارت اور سعودی عرب دو خودمختار ممالک ہیں، انکے آپس میں تعلقات ہیں، ہمارے ساتھ بھی ہیں۔ ڈی جی آئی ایس پی آر نے کہا کہ انکوائری کے دوران جنرل اسد درانی ملٹری کوڈ آف کنڈٹ کی خلاف ورزی ثابت ہوئی اور عدالت نے ان کی پینشن اور دیگر مرعات ختم کردی ہیں لیکن ان کا رینک برقرار ہے۔
خبر کا کوڈ : 779404
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب