0
Thursday 18 Apr 2019 08:38

دنیا کو سچ سے دُور رکھنے کی سازش، آیت اللہ سید علی خامنہ ای کا انسٹاگرام اکاونٹ معطل

دنیا کو سچ سے دُور رکھنے کی سازش، آیت اللہ سید علی خامنہ ای کا انسٹاگرام اکاونٹ معطل
اسلام ٹائمز۔ سوشل شیئرنگ ایپلی کیشن انسٹاگرام نے ایران کے سپریم لیڈر آیت اللہ سید علی خامنہ ای اور پاسداران انقلاب کے 3 کمانڈرز کے اکاؤنٹس معطل کر دئیے۔ انسٹاگرام کی جانب سے یہ قدم امریکا کی جانب سے ایرانی پاسداران انقلاب کو دہشتگرد تنظیم قرار دیئے جانے کے ایک ہفتے بعد اٹھایا گیا۔ امریکا نے رواں ماہ 8 اپریل کو پاسداران انقلاب کو دہشتگرد تنظیم قرار دیا تھا۔ امریکا نے پاسداران انقلاب کو دہشتگرد قرار دیتے ہوئے اس پر دیگر پابندیاں بھی عائد کی تھیں جن کے تحت ایرانی مسلح فوج کے اثاثے منجمد کیے جائیں گے، ساتھ ہی امریکی شہریوں پر پاسداران انقلاب کے ساتھ کاروبار کرنے پر بھی پابندی عائد کی گئی تھی۔ امریکا کے فیصلے کے بعد جہاں کاروباری ادارے پاسداران انقلاب کیساتھ تعلقات ختم کرنے کے پابند ہیں، وہیں امریکا سے چلنے والی سوشل میڈیا ویب سائٹس پر بھی اس فیصلے کو تسلیم کرنا پڑے گا۔
 
میڈیا رپورٹس کے مطابق انسٹاگرام نے سپریم لیڈر آیت اللہ سید علی خامنہ ای سمیت پاسداران انقلاب کے 3 کمانڈرز کے اکاؤنٹس بھی معطل کر دیئے۔ رپورٹ کے مطابق انسٹاگرام نے فوری طور پر آیت اللہ خامنہ ای اور کمانڈرز کے صرف انگریزی زبان میں چلنے والے اکاؤنٹس معطل کیے گئے ہیں، ان کے فارسی زبان میں اکاؤنٹس تاحال بحال ہیں۔ رپورٹ کے مطابق جن کمانڈروں کے اکاؤنٹس معطل کیے گئے ہیں ان میں پاسدارن انقلاب کے کمانڈران چیف میجر جنرل محمد علی جعفری، پاسدارن انقلاب کی بری فوج کے کمانڈر جنرل محمد پاک پور اور القدس فورس کے کمانڈر میجر جنرل قاسم سلیمانی شامل ہیں۔ ایران کے سپریم لیڈر آیت اللہ سید علی خامنہ ای کا اکاؤنٹ بھی معطل کردیا گیا ہے۔
 
رپورٹ کے مطابق ایران کی وزارت مواصلات اور اطلاعات نے انسٹاگرام کی جانب سے سپریم لیڈر اور پاسداران انقلاب کے کمانڈرز کے اکاؤنٹس کو معطل کیے جانے کی تصدیق کی ہے۔ وزارات مواصلات اور اطلاعات نے انسٹاگرام کے فیصلے کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ ایرانی رہنماؤں کے اکاؤنٹس کو معطل کرنے سے یہ بات ظاہر ہوتی ہے کہ انہیں دنیا کو سچائی بتانے سے روکا جا رہا ہے۔
خبر کا کوڈ : 789241
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب