0
Saturday 27 Apr 2019 22:40

این سی کے پاس اقتدار کے سوا کوئی پروگرام نہیں ہے، عبدالغنی وکیل

این سی کے پاس اقتدار کے سوا کوئی پروگرام نہیں ہے، عبدالغنی وکیل
اسلام ٹائمز۔ جموں و کشمیر پیپلز کانفرنس کے نائب صدر اور سابق وزیر عبدالغنی وکیل نے نیشنل کانفرنس لیڈرشپ کو آڑے ہاتھوں لیتے ہوئے کہا کہ وقت نے بار بار ثابت کردیا کہ فاروق عبداللہ اور عمر عبداللہ اقتدار کے حصول کے لئے کسی بھی حد تک جاسکتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ وہ اقتدار کے لئے اگر انہیں لاشوں پر سے گزرنا پڑے یا جذباتوں کا استحصال کرنا پڑے تو وہ گریز نہیں کریں گے۔ اپنے ایک بیان میں عبدالغنی وکیل نے کہا کہ یہ حیرانگی کی بات ہے کہ آج ممبر پارلیمنٹ بننے کے لئے فاروق عبداللہ خود کو جماعت اسلامی اور یاسین ملک کا بڑا ہمدرد جتلا رہے ہیں حالانکہ فاروق عبداللہ نے ہی اپنے دور میں جماعت اسلامی پر پابندی لگا دی اور یاسین ملک کو کئی دفعہ جیلوں میں ٹھونس دینے کے علاوہ کشمیر میں ٹاسک فورس اور پوٹا لایا۔

عبدالغنی وکیل نے کہا کہ این سی نے ہی بدنام زمانہ قوانین کے تحت کشمیر میں جیل خانے میں تبدیل کردیا اور آج اقتدار کی ہوس میں فاروق عبداللہ پتھر چلانے والوں کو مجاہدین آزادی کہہ رہے ہیں حالانکہ حقیقت یہ ہے کہ بارہا نیشنل کانفرنس کے غلط فیصلوں کی وجہ سے کشمیر میں موت و تباہی کا سلسلہ شروع ہوا اور کشمیر میں موجودہ غیر یقینی صورتحال کے لئے این سی لیڈر شپ کے غلط کارنامے ہی ذمہ دار ہیں۔ نیشنل کانفرس کو گرگٹ کی طرح رنگ بدلنے والوں سے تعبیر کرتے ہوئے انہوں نے کہ کہ وقت آچکا ہے جب عوام کو اقتدار کے بھوکے ایسے لوگوں کو سبق سکھانا چاہیئے تاکہ وہ دوبارہ عوام کو جھوٹے وعدے دیکر استحصال کرنے کی ہمت نہ کریں۔ انہوں نے کہا کہ وقت نے ثابت کردیا ہے کہ این سی کے پاس اقتدار کے سوا کوئی پروگرام نہیں ہے اور اقتدار میں آکر یہ دہلی میں آکر کسی کا بھی دامن پکڑ سکتے ہیں چاہے وہ آر ایس ایس ہی کیوں نہ ہو کیونکہ یہ کشمیر میں ہمیشہ آر ایس ایس کے پروردہ رہے ہیں۔
خبر کا کوڈ : 791006
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے