0
Saturday 15 Jun 2019 16:27

پرویز خٹک کی حکومت 5 سالہ دور میں سالانہ ترقیاتی پروگرام کا پورا استعمال نہ کرسکی

پرویز خٹک کی حکومت 5 سالہ دور میں سالانہ ترقیاتی پروگرام کا پورا استعمال نہ کرسکی
اسلام ٹائمز۔ پاکستان تحریک انصاف کی پرویزخٹک حکومت اپنے 5 سالہ دور میں کسی بھی سال سالانہ ترقیاتی پروگرام کا پورا استعمال نہ کرسکی اور ہر مالی سال کے دوران ترقیاتی منصوبوں کیلئے مختص فنڈز لیپس ہوتے رہے۔ سرکاری ریکارڈ کے مطابق مالی سال 2013-14ء کیلئے خیبر پختونخوا حکومت نے اپنے وسائل سے سالانہ ترقیاتی پروگرام کیلئے 83 ارب روپے مختص کئے جو نظرثانی شدہ تخمینہ جات میں کم کرتے ہوئے 75 ارب کردیئے گئے، تاہم 66 ارب روپے ہی استعمال کئے جاسکے۔ مالی سال 2014-15ء میں 100 ارب روپے کی تخصیص کی گئی جو نظرثانی شدہ تخمینہ جات میں کم کرتے ہوئے97 ارب کئے گئے جبکہ استعمال 90 ارب ہوئے۔ مالی سال 2015-16ء میں 113 ارب کے سالانہ ترقیاتی پروگرام کو نظرثانی شدہ تخمینہ جات میں 108 ارب کیا گیا تاہم 101 ارب ہی خرچ ہوپائے۔

سال 2016-17ء کیلئے 125 ارب کا سالانہ ترقیاتی پروگرام دیا گیا جسے کم کرتے ہوئے 123 ارب کیا گیا جبکہ 119 ارب ہی خرچ ہو پائے۔ سال 2017-18ء کیلئے 126 ارب روپے مختص کئے گئے جسے کم کرتے ہوئے 114 ارب کیا گیا جبکہ 106 ارب استعمال کئے جاسکے، جبکہ جاری مالی سال 2018-19ء کیلئے 108 ارب 90 کروڑ مختص کئے گئے جو نظرثانی شدہ تخمینہ جات میں کم کرتے ہوئے 95 ارب 60 کروڑ کئے گئے، تاہم مالی سال کے اختتام تک 76 ارب 10 کروڑ روپے استعمال کئے جانے کا امکان ہے۔ سال 2013-14ء کے مقابلے میں سال 2014-15ء کیلئے سالانہ ترقیاتی پروگرام کے حجم میں 20 فیصد، سال 2015-16ء کیلئے گذشتہ سال کے مقابلے میں 13 فیصد، سال 2016-17ء کیلئے گذشتہ سال کے مقابلے میں 11 فیصد اور سال 2017-18ء کیلئے گذشتہ سال کے مقابلے میں ایک فیصد اضافہ کیا گیا۔

جاری مالی سال 2018-19ء کیلئے گذشتہ مالی سال کے مقابلے میں سالانہ ترقیاتی پروگرام کے حجم میں 14 فیصد کمی کی گئی جبکہ آئندہ مالی سال 2019-20ء کیلئے جاری مالی سال کے مقابلے میں 12 فیصد اضافہ کیا جارہا ہے۔ پرویز خٹک کی حکومت میں ہر مالی سال کے دوران ترقیاتی منصوبوں کیلئے مختص فنڈز لیپس ہوتے رہے۔ مذکورہ فنڈز کا پورا استعمال نظرثانی شدہ تخمینہ جات میں کمی کے باوجود بھی نہ کیا جاسکا، جبکہ جاری مالی سال کے سالانہ ترقیاتی پروگرام میں گزشتہ سال کے مقابلے میں 14 فیصد کمی بھی واقع ہوئی۔
خبر کا کوڈ : 799657
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب