0
Sunday 16 Jun 2019 21:37

قبائلی علاقوں میں ترقیاتی منصوبوں کیلئے ایک کھرب روپے مختص

قبائلی علاقوں میں ترقیاتی منصوبوں کیلئے ایک کھرب روپے مختص
اسلام ٹائمز۔ خیبرپختونخوا کی حکومت نے آئندہ بجٹ میں صوبے میں ضم ہونے والے قبائلی علاقوں کے لیے 162 ارب روپے مختص کردیئے۔  162 ارب روپے میں سے تقریباً 100 ارب روپے ترقیاتی منصوبوں پر خرچ کیے جائیں گے۔ خیال رہے کہ صوبائی وزیر خزانہ تیمور سلیم جھگڑا صوبائی اسمبلی میں 18 جون کو بجٹ 20-2019 پیش کریں گے۔  دستاویزات کے مطابق حکومت نے اگلے مالی سال کے بجٹ میں خیبرپختونخوا میں ضم ہونے والے قبائلیوں علاقوں میں ترقیاتی منصوبوں کے لیے 100 ارب روپے متخص کیے۔ بجٹ اعداد و شمار کے مطابق حکومت اگلے 10 برسوں میں تقریباً 59 ارب روپے خرچ کرنے کا ارادہ کرچکی ہے جبکہ وفاقی حکومت تقریباً 48 ارب روپے اور صوبائی حکومت تقریباً 11 ارب روپے فراہم کرے گی۔ اس حوالے سے بتایا گیا کہ 10 سالہ منصوبے کے تحت خطے میں اقتصادی ترقی کے لیے تقریباً ایک کھرب روپے خرچ کیے جائیں گے۔ بجٹ رپورٹ کے مطابق حکومت نے تقریباً 17 ارب روپے آئی ڈی پیز (قبائلی علاقوں سے بے گھر متاثرین) کے مختص کیے ہیں۔ محکمہ فنانس قبائلی علاقوں میں بجلی فراہمی کے ادارے (ٹسکو) کے تحت 10 منصبوں کے لیے 10 ارب روپے جاری کرے گا۔ ضم ہونے والے قبائلی علاقوں میں ریسکیو 1122 سروس بھی شروع کی جائے گی، جس کے لیے بجٹ میں ایک ارب روپے مختص کیے گئے۔ خطے میں انصاف روزگار اسکیم کے لئے ایک ارب روپے سے زائد رقم مختص کیے گئے۔ حکام نے میڈیا کو بتایا کہ 17 جون کو 10 ارب روپے جاری کردیئے جائیں گے۔ دستاویزات کے مطابق وزیراعظم عمران خان کی خصوصی ہدایت پر قبائلی اضلاع میں اے ڈی پی 20-2019 کے تحت تقریباً 2 ارب 40 کروڑ روپے خرچ ہوں گے۔ دستاویزات کے مطابق جنوبی وزیرستان میں ٹیلی میڈیسن اور اسپورٹس کی سہولیات سے متعلق منصوبوں کے لیے تقریباً 36 کروڑ 20 لاکھ روپے کیے جائیں گے جبکہ 18 کروڑ روپے کی مدد سے اسمال انڈسٹری تعمیرکی جائے گی اور جاجوڑ اور ضلع مہمند کی مساجد میں سولر لگائے جائیں گے۔ علاوہ ازیں ضلع خیبرمیں مساجد میں سولر لگانے کے لیے 16 کروڑ 60 لاکھ روپے خرچ کیے جائیں گے۔ دستاویزات کے مطابق ضلع اورکزئی میں اسپورٹ اسٹیڈیم کی تعمیر اور علاقے میں سیاحت کو فروغ دینے کے لیے 47 کروڑ 50 لاکھ روپے مختص کیے گئے ہیں۔ علاوہ ازیں وزیر اعلیٰ کی ہدایت پر 1 ارب 90 کروڑ روپے ضم ہونے والے قبائلی علاقوں کے چار اضلاع میں خرچ ہوں گے۔ بجٹ دستاویزات کی رو سے جنوبی وزیرستان ضلع میں تعلیمی اداروں کی تعمیر، ٹیوب ویل پر سولر کی تنصب سمیت وانا میں اسپورٹس کامپلکس، گراؤنڈ اور چیک ڈیمز کی تعمیرات پر تقریباً 1 ارب 20 کروڑ روپے مختص کیے گئے ہیں۔
خبر کا کوڈ : 799854
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب