0
Monday 15 Jul 2019 22:39

فیصل آباد، صنعتکاروں اور چئیرمین ایف بی آر کے مذاکرات ناکام، لاکھوں مزدور بے روزگار

فیصل آباد، صنعتکاروں اور چئیرمین ایف بی آر کے مذاکرات ناکام، لاکھوں مزدور بے روزگار
اسلام ٹائمز۔ وفاقی حکومت کی جانب سے نئے ٹیکس لگائے جانے کے بعد فیصل آباد کی پروسیسنگ ملز 17 فیصد سیلز ٹیکس اور شناختی کارڈ فراہم کرنے کی شرط پر 18 روز سے ہڑتال پر ہیں، جس سے ٹیکسٹائل سیکٹر کی پوری چین متاثر ہو رہی ہے، جبکہ 60 ہزار سے زائد پاور لومز یونٹ بھی بند پڑے ہیں، جس سے لاکھوں مزدور بے روزگار ہو چکے ہیں۔ فیصل آباد کے صنعتکاروں کے دس رکنی وفد اور فیصل آباد کے 4 ممبران قومی اسمبلی شیخ خرم شہزاد، فرخ حبیب، فیض اللہ کموکا اور رضا نصراللہ گھمن نے چئیرمین ایف بی آر شبر زیدی سے اسلام آباد میں ملاقات کی، جنہوں نے 17 فیصد سیلز ٹیکس کو ختم یا کم کرکے سنگل ڈجٹ میں لانے اور شناختی کارڈ فراہم کرنے کی شرط واپس لینے کا مطالبہ کیا۔ چئیرمین ایف بی آر شبر زیدی نے صنعتکاروں کے دونوں مطالبات ماننے سے صاف انکار کرتے ہوئے کہنا تھا کہ 17 فیصد سیلز ٹیکس نافذ ہو چکا ہے، جس کو 16 فیصد بھی نہیں کیا جا سکتا جبکہ شناختی کارڈ فراہم کرنے کی شرط پر بھی ہر صورت میں یکم اگست سے نافذ العمل ہوگی۔ صنعتکاروں نے ود ہولڈنگ ٹیکس کو 4.5 فیصد سے کم کرکے ایک فیصد اور ٹرن اوور ٹیکس کو 1.5 فیصد سے کم کرکے 0.10 فیصد کرنے کی تجاویز بھی پیش کیں، جس پر شبر زیدی نے سوچ بچار کے لئے ٹائم مانگ لیا ہے۔
 
خبر کا کوڈ : 805227
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب