0
Monday 22 Jul 2019 15:33

ہم بیرکوں میں رہتے ہیں، وزیراعظم کے بیان پر سابق صدر زرداری کا رد عمل

ہم بیرکوں میں رہتے ہیں، وزیراعظم کے بیان پر سابق صدر زرداری کا رد عمل
اسلام ٹائمز۔ نیب کی حراست میں موجود سابق صدر آصف علی زرداری نے جیل میں قید سیاستدانوں سے سہولیات واپس لینے سے متعلق وزیراعظم عمران خان کے بیان پر رد عمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ سہولتیں کون سی دی ہیں؟ صحافی نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ ٹی وی اور اے سی واپس لے لیے جائیں گے۔ جس پر سابق صدر آصف علی زرداری نے جواب دیا کہ ہم تو پہلے بھی بیرکوں میں رہتے ہیں۔ یاد رہے کہ وزیراعظم عمران خان نے گذشتہ روز واشنگٹن میں پاکستانی کمیونٹی سے خطاب کرتے ہوئے کہا تھا کہ نہ کسی کے سامنے جھکے ہیں اور نہ کبھی جھکیں گے۔ جیل میں قید سیاستدانوں کو دی جانی والی سہولیات کے حوالے سے انہوں نے کہا تھا کہ سابق وزیر اعظم نوازشریف جیل میں گھرکا کھانا، ٹی وی، اے سی مانگتے ہیں، مگر انہیں اب کچھ نہیں ملے گا، واپس جا کر جیل سے ٹی وی، اے سی اُتروا لیں گے۔ یاد رہے کہ آج جعلی اکاؤنٹس کیس میں پیشی کے لیے سابق صدر اور پاکستان پیپلز پارٹی (پی پی پی) کے شریک چیئرمین آصف علی زرداری احتساب عدالت پہنچے۔ اس موقع پر اسلام آباد انتظامیہ اور پولیس کی جانب سے سکیورٹی کے سخت اقدامات کیے گئے۔ احتساب عدالت کے تمام داخلی و خارجی راستوں کو سیل کر دیا گیا جبکہ کسی بھی غیر متعلقہ شخص کے داخلے پر پابندی عائد کر دی گئی۔ دوران سماعت سابق صدر آصف علی زرداری نے شہزاد اکبر کے بیان سے متعلق اخبارری تراشے عدالت میں جمع کروائے۔ جس پر احتساب عدالت کے جج محمد بشیر نے سابق صدر سے کہا کہ اگر آپ لیگل نوٹس کرنا چاہتے ہیں تو اس کے لیے اپلائی کریں۔ جج محمد بشیر نے تراشے آصف زرداری کے وکیل کو دے کر کہا کہ آپ یہ پڑھ لیں اور قانون کے تحت درخواست دیں۔ سابق صدر کا کہنا تھا کہ میری بیرون ملک جائیدادوں سے متعلق شہزاد اکبر کو بُلا کر پوچھا جائے۔ عدالت نے فریال تالپور کے جسمانی ریمانڈ میں 7 روز کی توسیع کرتے ہوئے 29 جولائی کو دوبارہ پیش کرنے کا حکم دیا۔
خبر کا کوڈ : 806374
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب