0
Tuesday 13 Aug 2019 20:18

ناروے کی مسجد میں فضائیہ کے ریٹائرڈ افسر نے حملہ ناکام بنا دیا

ناروے کی مسجد میں فضائیہ کے ریٹائرڈ افسر نے حملہ ناکام بنا دیا
اسلام ٹائمز۔ ناروے کے علاقے اوسلو کے مضافات میں قائم مسجد پر دہشت گردانہ حملے کو پاک فضائیہ کے 65 سالہ ریٹائرڈ افسر نے بہادری کا مظاہرہ کرتے ہوئے ناکام بنایا۔ واضح رہے کہ 10اگست کو سفید فام دہشت گرد نے النور اسلامک سینٹر میں فائرنگ کی تھی، جس سے ایک معمر نمازی جاں بحق ہو گئے تھے۔ برطانوی نشریاتی ادارے کی رپورٹ کے مطابق مسجد کے امام عرفان مشتاق کا کہنا تھا کہ 2 شارٹ گن اور ایک پستول سے لیس دہشتگرد ہیلمٹ اور زرہ بکتر پہنے مسجد میں داخل ہوا اور اس نے گولیاں چلائیں۔ ان کا کہنا تھا کہ ملزم کے گولی چلاتے ہی 65 سالہ پاک فضائیہ کے محمد رفیق نے اسے پکڑ لیا جس پر انہیں چوٹیں بھی آئیں۔ رائٹرز کو انٹرویو دیتے ہوئے محمد رفیق کا کہنا تھا کہ مجھے باہر سے گولی چلنے کی آوازیں آئیں، وہ 2 لوگوں پر گولیاں چلارہا تھا، میں نے اسے دبوچ لیا اور اس سے اسلحہ چھینا۔

بعد ازاں انہوں نے دہشت گرد کو پولیس کے حوالے کردیا، پولیس نے حملے کو دہشت گردی کا واقعہ قرار دیا۔ پولیس آپریشن کے قائم مقام چیف رنی اسکو جڈل نے واقعے کو دہشت گردی قرار دیتے ہوئے بتایا کہ زیر حراست حملہ آور انتہا پسندانہ سوچ کا حامل ہے۔ انہوں نے بتایا کہ زیر حراست ملزم غیر مقامی افراد کے خلاف پرتشدد خیالات رکھتا ہے۔ ناروے کے میڈیا نے رپورٹ کیا کہ زیر حراست مشتبہ شخص نے آن لائن نیوزی لینڈ میں مساجد پر حملوں کی حمایت کی تھی۔ حملے کے فوری بعد پولیس کا کہنا تھا کہ انہوں نے ایک گھر سے ملزم سے تعلق رکھنے والی ایک لڑکی کی لاش بر آمد کی ہے۔ انہوں نے تصدیق کی کہ لڑکی دہشت گرد کی 17 سالہ سوتیلی بہن ہے۔ مسجد پر حملہ کرنے والے دہشت گرد کے خلاف لڑکی کے قتل کا مقدمہ بھی درج کیا گیا۔ پاکستانی بزرگ کی بہادری پر سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر تعریفیں کی جانے لگیں، جس کے بعد لفظ محمد رفیق ٹوئٹر پر ٹاپ ٹرینڈ بن گیا۔
 
خبر کا کوڈ : 810338
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب