0
Friday 16 Aug 2019 09:44

یوم آزادی کے حوالے سے کراچی میں 22 ارب روپے کی ریکارڈ خریداری

یوم آزادی کے حوالے سے کراچی میں 22 ارب روپے کی ریکارڈ خریداری
اسلام ٹائمز۔ شہر قائد میں شدید بارش اور عیدالالضحیٰ کی تقریبات کے باوجود شہریوں نے ملک کے 73ویں یومِ آزادی پر 22 ارب روپے کی خریداری کا ریکارڈ قائم کردیا، ملکی تاریخ میں پہلی مرتبہ جشن آزادی کی تقریبات یکم اگست سے ہی شروع کردی گئیں، لائن آف کنٹرول پر جارحیت اور کشمیری مسلمانوں کے خلاف بڑھتے بھارتی مظالم سے پاکستانی عوام میں وطن کی محبت کا جوش و خروش بڑھ گیا، پاکستان کا بچہ بچہ حب الوطنی سے سرشار اور جشن آزادی کی بہار لوٹنے میں مگن رہا، عوام نے سوشل میڈیا پر ایک دوسرے کو عیدالاضحی کی مبارکبادوں سے دوگنا زائد یومِ آزادی کی مبارکباد دی، تاجروں اور عوام نے بھارتی مصنوعات کا بائیکاٹ کرکے بھارتی حکومت کے منفی رویے سے شدید نفرت کا اظہار کیا۔ آ ل کراچی تاجر اتحاد کے چیئرمین عتیق میر نے یومِ آزادی پر عوام کے جوش و خروش اور جذبہِ حب الوطنی کو بے مثال اور لازوال قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ کراچی کے شہریوں نے وطن، قوم، افواجِ پاکستان سے عقیدت، محبت اور اظہارِ یکجہتی کی نئی تاریخ رقم کردی ہے، بیشتر نوجوانوں نے عید پر نیا سوٹ سلوانے کے بجائے ملک سے اظہار یکجہتی کے طور پر سبز ہلالی پرچم کی ٹی شرٹس اور ٹرائوزر زیب تن کیا۔

عتیق میر نے کہا کہ 14 اگست سے قبل ہی یوم آزادی کی تقریبات اور جشن کی گہما گہمی شروع ہوچکی تھی، شہر قومی پرچموں، برقی قمقموں، رنگین جھالروں اور جھنڈیوں سے شہر جگمگاتا رہا، شہر میں ہر جانب قومی اور ملیّ نغموں کی گونج سنائی دیتی رہی، رواں سال عوام میں جشنِ آزادی کا روایتی جوش وخروش اور ولولہ ماضی کے مقابلے میں کئی گنا زیادہ نظر آیا۔ انہوں نے کہا ہے کہ یہ بات انتہائی خوش آئند ہے کہ قوم کا ملک اور فوج سے عشق جنون کی حد تک بڑھ رہا ہے، جو کہ دشمنان پاکستان کو کھلا پیغام ہے کہ جس ملک کا بچہ بچہ مجاہد ہو، اسے تر نوالہ سمجھنے کی غلطی نہ کرے۔ انہوں نے کہا کہ 73ویں یومِ آزادی پر مارکیٹوں میں سجاوٹ، کیک کاٹنے اور پرچم کشائی کی لاتعداد تقاریب منعقد کی گئیں، جن کی ماضی میں کوئی نظیر نہیں ملتی۔ انہوں نے کہا کہ شہر کے کئی مقامات پر شدید بارش اور گلیوں میں جمع پانی کے باوجود عوام نے جھنڈوں اور دیگر سامان کی خریداری کی، گلی گلی قومی پرچموں کی فروخت کے اسٹالز لگائے گئے۔

جشن آزادی پر مقامی بازار چین سے درآمد شدہ اور پاکستانی سامان کی بہت بڑی مارکیٹ میں تبدیل ہوگیا، جس میں 70 فیصد درآمدی اور 30 فیصد مقامی سامان کا حصہ رہا، بازاروں میں جھنڈے، ٹی شرٹس، بیج، کیپس، غبارے، چوڑیاں، ماسک، جھنڈیاں، کانوں کے بندے، بنیانیں، خواتین، بچوں اور نوجوانوں کے سبز ہلالی ریڈی میڈ گارمنٹس، دوپٹے، ملّی نغموں کی سی ڈیز، آتشبازی کا سامان، فیس پینٹنگ، بچوں کی عینکیں، کڑے اور دیگر اشیاء کی بھرپور خریداری کی گئی، آزادی کی خوشی میں رواں سال بھی ملّی نغموں پر مشتمل پروگرام اور قومی پرچم لہرانے کی ہزاروں تقریبات منعقد کی گئیں، بسوں، رکشوں، ٹرکوں اور موٹر سائیکلوں پر جھنڈے لہرائے گئے، بیشتر مقامات پر دعوتوں کا اہتمام، مٹھائی تقسیم اور آزادی کی سالگرہ کے کیک بھی کاٹے گئے۔
خبر کا کوڈ : 810800
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب