0
Sunday 29 Sep 2019 11:07

عمران خان کا دورہ امریکہ کامیاب رہا اور اب ہمیں آگے کا سوچنا چاہیئے، شمشاد خان

عمران خان کا دورہ امریکہ کامیاب رہا اور اب ہمیں آگے کا سوچنا چاہیئے، شمشاد خان
اسلام ٹائمز۔ پاکستان کے سابق سیکرٹری خارجہ شمشاد خان نے نجی ٹی وی کے ٹاک شو میں گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ عمران خان کا اصل امتحان اب شروع ہوا ہے کیوں کہ انہوں نے اپنے ملک کو مضبوط کرنا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ عمران خان کا دورہ امریکہ کامیاب رہا اور اب ہمیں آگے کا سوچنا چاہیئے۔ سابق سکرٹری خارجہ نے کہا کہ عمران خان کا چیلنج اب گھر میں شروع ہو رہا ہے، جس کے لئے اچھی ٹیم کی ضرورت ہے، ایسی ٹیم جو ملک کو معاشی مشکلات اور بدعنوانی کے مقدمات سے جلد باہر نکالے۔ شمشاد خان نے کہا کہ پاکستان بھارت سے کم نہیں لیکن ماضی کے چند سالوں میں ہم نے اپنی کمزوریوں کا تاثر دیا ہے۔ ان کا کہنا تھا بھارتی فوج پاکستان کے ساتھ جنگ نہیں کرنا چاہتی کیوں کہ ان کو اپنی طاقت کا علم ہے، مگر مودی خطے میں کشیدگی چاہتا ہے۔ سابق سیکرٹری نے کہا کہ اگر کشمیر کی جدوجہد آزادی میں شدت آئے گی، تو مودی کچھ بھی کر سکتا ہے اور اگر حالات زیادہ خراب ہوگئے تو عالمی برادری مداخلت کرے گی۔

انہوں نے کہا کوئی ذی شعور یہ توقع نہیں کر سکتا کہ اس خطے کے حالات ایٹمی جنگ کی طرف جائیں، عالمی طاقتوں کو چاہیئے کہ مداخلت کر کے پاکستان اور بھارت کو مذاکرات کی میز پر لائیں۔ سابق سیکرٹری خارجہ شمشاد اختر نے کہ پاکستان مضبوط ہوگا، تو کشمیر مضبوط ہوگا، جب تک ہم خودانحصار نہیں ہو جاتے مسئلہ کشمیر حل نہیں ہو سکتا۔ ان کا کہنا تھا کہ پاکستان کے وزیراعظم نے مخالفین کو تنقید کا موقع نہیں دیا اور جو کشمیریوں کی ذمہ داری لی تھی وہ پوری طرح نبھائی ہے۔ شمشاد خان نے کہا کہ امریکہ مسئلہ کشمیر حل کرنے پر آمادہ ہے، لیکن بھارت کو مجبور کرنے پر تیار نہیں، امریکہ بھارت کیخلاف کبھی بھی سخت رد عمل نہیں دے گا۔ انہوں نے کہا جب جنگ کا خطرہ اور آنے والے دنوں میں کشمیر کے حالات ہی دنیا کو عملی اقدام اٹھانے پر مجبور کر سکتے ہیں۔ سابق سیکرٹری نے کہا کہ عمران خان کے پاس افغانستان کا کارڈ ہے اور اب افغان امن عمل میں مسئلہ کشمیر بھی زیر بحث آئے گا۔ انہوں نے مشورہ دیا کہ پاکستان کو چاہیئے خطے میں اپنی جغرافیائی اہمیت کو استعمال کرے۔
 
خبر کا کوڈ : 818995
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب