0
Friday 11 Oct 2019 14:17

انتخابات کے بعد مولانا کی بات نہ مان کر غلطی کی، نواز شریف

انتخابات کے بعد مولانا کی بات نہ مان کر غلطی کی، نواز شریف
اسلام ٹائمز۔ سابق وزیراعظم نواز شریف نے کہا ہے کہ الیکشن کے بعد مولانا نے اسمبلیوں سے استعفے دینے کا مشورہ دیا تھا، جسے نہ مان کر غلطی کی۔ احتساب عدالت میں پیشی کے موقع پر ذرائع ابلاغ سے گفتگو کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ مولانا فضل الرحمٰن نے انتخابات کے بعد احتجاج کرنے کا کہا، جس کو رد کرنا ہماری غلطی تھی۔ سابق وزیراعظم نے کہا کہ نون لیگ دھرنے اور آزادی مارچ کی مکمل حمایت کرتی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ شہباز شریف کو ایک خط میں سب کچھ لکھ کر بھیج دیا ہے۔ لاہور کی احتساب عدالت نے سابق وزیراعظم نواز شریف چوہدری شوگر ملز کیس میں 14 روزہ ریمانڈ پر نیب کے حوالے کر دیا ہے۔ احتساب عدالت کے جج امیر محمد نے معاملے کی سماعت کی، اور نیب کی جانب سے 15 روزہ ریمانڈ کی استدعا کی گئی۔ العزیزیہ اسٹیل ملز کیس میں سزا یافتہ سابق وزیراعظم میاں نواز شریف نے جمعیت علمائے اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمٰن کے احتجاج کی بھرپور حمایت کرنے کا اعلان کر دیا۔

چوہدری شوگر ملز کیس میں گرفتاری کے بعد احتساب عدالت میں پیشی کے موقع پر مسلم لیگ (ن) کے قائد کا کہنا تھا کہ ہم مولانا فضل الرحمٰن کے موقف کو اپنا ہی موقف سمجھتے ہیں، اس لئے ان کی مکمل حمایت کرتے ہیں۔ نواز شریف کو سخت سکیورٹی حصار میں عدالت پہنچایا گیا اور امن و امان کی صورتحال برقرار رکھنے کے لئے پولیس کی بھاری نفری بھی تعینات کی گئی ہے۔ لاہور جوڈیشیل کمپلیکس کے اندر پولیس کا کڑا پہرا ہے اور باہر نون لیگی کارکنوں کی بڑی تعداد موجود ہے۔ نواز شریف کی پیشی کے موقع پر کمرہ عدالت میں دھکم پیل بھی ہوئی، جس سے لیگی رہنماء طلال چوہدری میز سے گر گئے، تاہم کوئی چوٹ نہیں آئی۔ خیال رہے کہ قومی احتساب بیورو نے نواز شریف کی چوہدری شوگر ملز کیس میں بھی گرفتاری ڈال دی ہے اور آج انہیں ریمانڈ کے حصول لئے احتساب عدالت پیش کیا گیا ہے۔
خبر کا کوڈ : 821445
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب