0
Friday 18 Oct 2019 14:48

پاراچنار، سدارہ عباس کا دیرینہ مسئلہ حل، فریقین میں برادرانہ فضا قائم

پاراچنار، سدارہ عباس کا دیرینہ مسئلہ حل، فریقین میں برادرانہ فضا قائم
اسالام ٹائمز۔ پاراچنار کے نواحی علاقے سدارہ عباس کا پانچ سالہ دیرینہ مسئلہ مولانا الطاف حسین ابراہیمی، مولانا محمد اللہ آغا اور پیواڑ سے تعلق رکھنے والے اسرار حسین کی مخلصانہ کوششوں اور فریقین یعنی سادات اور غیر سادات کے خصوصی تعاون سے حل ہوگیا۔ اور فریقین میں امن وامان کی فضا قائم ہونے کے بعد اربعین کی مجالس اکٹھی شروع ہوگئیں۔ موقع پر موجود ہمارے نمائندے کے مطابق فریقین فیروز خیل اور ماروخیل اور انکے مشران حاجی سید اسرار حسین اور حاجی ملک ظاہر شاہ کو ثالثان نے زیارت کنڈے عباس کے مقام پر ایک ہی میز پر بٹھایا، اور یوں بات چیت کے بعد انکے مابین برادرانہ ماحول قائم کیا گیا۔ اس موقع پر مقتولین کے ورثاء بھی موجود تھے۔ انہوں نے قوم کی بہتر مفاد کی خاطر اپنے مقتولین کا خون معاف کیا۔ جسکے بعد دونوں فریقوں نے سید اسرار حسین اور ملک ظاہر شاہ کو قوم کا متفقہ مشران قرار دیا، اور انکی قیادت میں ہمیشہ متحد رہنے کا وعدہ کیا۔ اسکے بعد ثالثان فریقین کو صدارہ عباس لے گئے۔ اور وہاں مجالس کا آغاز کیا۔ جبکہ اس موقع پر مجالس دو علمائے کرام علامہ احسان اللہ آف ہنگو اور علامہ محمد اللہ آف خیواص پڑھائیں گے۔
خیال رہے کہ فریقین کے مابین 2014ء کو اربعیں ہی کے مجالس کے موقع پر مسلح تصادم ہوا تھا۔ جسکے نتیجے میں ایک زخمی جبکہ دو افراد جاں بحق ہوگئے تھے۔ جس پر حکومت نے فریقین کے درجنوں افراد گرفتار کرکے امام بارگاہ اور زیارت کو سیل کردیا تھا۔ اور اس وقت سے لیکر آج تک زیارت میں مجلس قائم نہیں ہوسکی تھی۔
خبر کا کوڈ : 822775
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب