0
Tuesday 22 Oct 2019 17:17

پاکستان کی خود مختاری کو بھارت اور فضل الرحمن سے ایک جیسا ہی خطرہ لاحق ہے، سنی تحریک

پاکستان کی خود مختاری کو بھارت اور فضل الرحمن سے ایک جیسا ہی خطرہ لاحق ہے، سنی تحریک
اسلام ٹائمز۔ سنی تحریک پنجاب کے جنرل سیکرٹری محمد زاہد حبیب قادری نے کہا ہے کہ جمہوریت کی جھوٹی دعویدار نواز لیگ اور پیپلز پارٹی کی براستہ مولانا فضل الرحمن مارشل لاء لانے کی خواہش پوری نہیں ہو گی۔ فضل الرحمن مذہب کارڈ استعمال کرکے 1977ء کی تحریک پیدا نہیں کر سکتے، تمام مسالک اور دینی جماعتوں نے فضل الرحمن کے مارچ کو مکمل طور پر مسترد کر دیا ہے۔ دینی مدارس کے طلبہ کو ڈھال بنا کر مولانا اپنی کرپشن کی غلاظت کو نہیں چھپا سکتے، نہ خود کو بچا سکتے ہیں۔ عمران خان کا یہ پہلا ٹیسٹ ہوگا کرپشن کیخلاف تقریریں بہت ہو چکیں اب کارروائی کا وقت ہے۔ انہوں نے کہاکہ پاکستان کی خود مختاری کو بھارت اور فضل الرحمن سے ایک جیسا ہی خطرہ لاحق ہے، ن لیگ اور پی پی فضل الرحمن کا کندھا استعمال کرنا چاہتی ہیں، کشمیر اور دینی مدارس کے نام پر زکوٰۃ، خیرات چندہ جمع کرنیوالے کس شریعت کے تحت اپنی کرپشن مارچ پر یہ پیسہ خرچ کر رہے ہیں؟

انہوں نے کہا کہ قانون نافذ کرنیوالے ادارے قوم کو جوابدہ ہوں مولانا فضل الرحمن کی انتہاء پسندی کیخلاف کب ان کی تنظیم کو کالعدم قرار دیا جائیگا؟ سنی تحریک کی سیاسی و دینی جماعتوں کو فضل الرحمن کے غیر جمہوری غیر سیاسی مارچ کو مسترد کرنے کی اپیل، مارچ کشمیر کاز کیخلاف ہے۔ مولانا فضل الرحمن کو بھارت کی جانب سے ملنے والا کشمیر ایشو خراب کرنے کا ٹاسک پاکستان کے غیور عوام کبھی بھی پورا نہیں ہونے دیں گے۔ پیپلز پارٹی، ن لیگ سیاسی زہنی توازن کھو چکی ہیں۔ عوام نے ان جماعتوں کو اپنے ووٹ کی طاقت سے مسترد کر دیا ہے۔ فضل الرحمن کو انتخابات میں عوام نے سیاسی ووٹوں کی خیرات دی نہ ہی زکوٰۃ جس کا انتقام اب وہ کشمیریوں کی تحریک کو متاثر کر کے لینا چاہتے ہیں۔ 27 اکتوبر کو ملک بھر میں بھارت کیخلاف یوم سیاہ منائیں گے، مولانا فضل الرحمن محض اپنی سیاسی حوس مٹانے کیلئے اوچھے ہتھکنڈے استعمال کرکے اپنے آقاؤں بھارتی حکمرانوں کو خوش کرنا چاہتے ہیں۔
خبر کا کوڈ : 823464
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب