?> خیبر پختونخوا میں بلدیاتی انتخابات کئی ماہ تک موخر ہونیکا امکان - اسلام ٹائمز
0
Friday 1 Nov 2019 12:24

خیبر پختونخوا میں بلدیاتی انتخابات کئی ماہ تک موخر ہونیکا امکان

خیبر پختونخوا میں بلدیاتی انتخابات کئی ماہ تک موخر ہونیکا امکان
اسلام ٹائمز۔ خیبر پختونخوا حکومت کی جانب سے قوانین میں ترمیم کی کوششوں کے باعث صوبے میں بلدیاتی انتخابات مہینوں تک کیلئے موخر ہونے کا امکان پیدا ہوگیا۔ الیکشن کمیشن پاکستان (ای سی پی) کے ذرائع نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ خیبر پختونخوا کی مقامی حکومتوں کی مدت رواں برس 28 اگست کو اختتام پذیر ہوچکی ہے اور نئے بلدیاتی انتخابات 27 دسمبر کو ہونے تھے جو بظاہر اب ناممکن دکھائی دیتے ہیں۔ اس ضمن میں ایک عہدیدار کا کہنا تھا کہ خیبر پختونخوا کے لوکل گورنمنٹ ایکٹ 2017ء کے مطابق الیکشن کمیشن بلدیاتی حکومت کی مدت ختم ہونے کے بعد 120 دن کے اندر دوبارہ انتخابات کروانے کا پابند ہے، لیکن وہ اب بھی حلقہ بندیوں کیلئے حکومت کی جانب سے معلومات کی فراہمی کا انتظار کر رہے ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ حلقہ بندیوں کیلئے 3 ماہ درکار ہوتے ہیں اور اگر یہ مسائل حل بھی کر لئے جائیں تو انتخابات کی تاریخ اور شیڈول کا اعلان کرنے کیلئے تقریباً 45 دن کا عرصہ چاہیئے ہوتا ہے۔ عہدیدار کا مزید کہنا تھا کہ ای سی پی نے صوبے میں بلدیاتی حکومت کی مدت ختم ہونے سے 6 ماہ قبل 5 مارچ کو خیبر پختونخوا حکومت کے نمائندوں کے ساتھ اجلاس کیا تھا اور انہیں بلدیاتی انتخابات کیلئے تمام شرائط پورا کرنے کی ہدایت کی تھی۔

اسوقت کمیٹی نے خاص طور پر ہدایت کی تھی کہ بلدیاتی ایکٹ میں جو بھی ترمیم درکار ہے اور جلد از جلد عمل میں لایا جائے وگرنہ ای سی پی ان ترامیم کا انتظار کئے بغیر موجود قوانین کے تحت انتخابات منعقد کروا دے گا۔ اس سلسلے میں صوبائی حکومت سے مطالبہ کیا گیا تھا مجوزہ ترمیم کا بل 30 اپریل سے قبل پیش کیا جائے تاکہ الیکشن کمیشن اپنے فرائض کی انجام دہی کر سکے اس کے ساتھ صوبائی حکومت کو حلقہ بندیوں کیلئے ضلعی نقشہ بھی تیار کرنےکی ہدایت کی گئی تھی۔ ای سی پی عہدیدار کا مزید کہنا تھا کہ صوبائی حکومت کے ساتھ دوسرا اجلاس 9 اپریل کو منعقد ہوا تھا۔ دوسرے اجلاس میں ای سی پی سیکرٹری نے اس بات پر زور دیا تھا کہ الیکشن کمیشن قانون کے تحت متعین کردہ مدت سے انحراف نہیں کرے گا۔ مذکورہ اجلاس میں بھی صوبائی حکومت کو خیبر پختونخوا اسمبلی سے قانون منظور کروانے کیلئے اقدامات کرنے کی ہدایت کی گئی تھی۔
خبر کا کوڈ : 825011
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

ہماری پیشکش