0
Tuesday 12 Nov 2019 17:46

ہمارا پلان بی آئیگا تو حکومت کے اوسان خطا ہو جائیں گے، اکرم خان درانی

ہمارا پلان بی آئیگا تو حکومت کے اوسان خطا ہو جائیں گے، اکرم خان درانی
اسلام ٹائمز۔ جمیعت علمائے اسلام (ف) کے رہنما اور خیبر پختونخوا اسمبلی میں قائد حزب اختلاف اکرم درانی کا کہنا ہے کہ ہمارا پلان بی آئے گا تو حکومت کے اوسان خطا ہو جائیں گے۔ حکومت سے مذاکرات کیلئے قائم اپوزیشن کی رہبر کمیٹی کے کنوینر اکرم درانی نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ پلان بی کے تحت اسلام آباد میں بھی دھرنا جاری رہے گا اور پورے ملک میں شاہراہیں بھی بند ہوں گی۔ اکرم درانی کا کہنا تھا کہ حکومت ایک طرف مذاکراتی کمیٹی ہمارے پاس بھیج رہی ہے تو دوسری طرف وزیر دفاع پرویز خٹک کچھ اور کہہ رہے ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ یہ یو ٹرن لیں گے اور ہمارا مطالبہ منظور ہو جائے گا۔ دوسری جانب آزادی مارچ کے پلان بی پر عمل درآمد کیلئے جمیت علمائے اسلام (ف) کی مرکزی قیادت کا اجلاس مولانا فضل الرحمٰن کی رہائشگاہ پر ہوا، تاہم اس میں کوئی نتیجہ نہ نکل سکا۔ ذرائع کے مطابق مولانا فضل الرحمٰن کی سربراہی میں ہونے والے اجلاس میں صوبائی اور ضلعی قیادت شریک ہوئی جس میں صوبائی امراء نے مشاورت کا وقت مانگ لیا ہے۔

جے یو آئی (ف) کے اجلاس میں آزادی مارچ کے انتظامات کا جائزہ بھی لیا گیا، مذاکرات کے حوالے سے حکومت کی غیر سنجیدگی پر بھی بات چیت ہوئی۔ خیال رہے کہ 2 نومبر کو جے یو آئی (ف) کے رہنما اکرم درانی کی سربراہی میں اپوزیشن کی رہبر کمیٹی کا اجلاس ہوا تھا، جس میں فیصلہ کیا گیا کہ اپوزیشن وزیراعظم کے استعفے اور نئے انتخابات کے مطالبے پر متفق ہے اور اگر ایسا نہ ہوا تو ڈی چوک تک جانے، پارلیمنٹ سے اجتماعی استعفوں، ملک گیر شٹر ڈاؤن اور ہائی ویز کو بلاک کرنے کی تجاویز ہیں۔ پلان بی آزادی مارچ کی ڈی چوک تک پیش قدمی، اجتماعی استعفے، ملک گیر شٹر ڈاؤن اور ہائی ویز بلاک کرنے میں سے کچھ بھی ہوسکتا ہے، تاہم اس حوالے سے جے یو آئی (ف) کا واضح مؤقف سامنے نہیں آیا۔
خبر کا کوڈ : 826975
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے