0
Friday 15 Nov 2019 10:43

نواز شریف کے پلیٹلیٹس کیوں کم ہو رہے ہیں اس کی تشخیص نہیں ہو پا رہی، ڈاکٹر عدنان

نواز شریف کے پلیٹلیٹس کیوں کم ہو رہے ہیں اس کی تشخیص نہیں ہو پا رہی، ڈاکٹر عدنان
اسلام ٹائمز۔ میاں نواز شریف کے ذاتی معالج ڈاکٹر عدنان نے سابق وزیراعظم کی حالت انتہائی تشویشناک قرار دے دی۔ نواز شریف کی صحت سے متعلق بیان دیتے ہوئے ڈاکٹر عدنان نے کہا کہ نواز شریف کے دماغ کو خون سپلائی کرنے والی رگیں پچاس سے اسی فی صد بند ہو چکی ہیں، شوگر کی وجہ سے نواز شریف کے گردے کام نہیں کر رہے جب کہ ان کے پلیٹلیٹس کیوں کم ہو رہے ہیں اس کی تشخیص نہیں ہو پا رہی۔ انھوں نے کہا کہ نواز شریف کی حالت انتہائی تشویش ناک ہے، انہیں پلیٹیلیٹس کی کمی کی وجہ سے دل کا دورہ بھی پڑا، حکومتی میڈیکل بورڈ بھی اس نتیجے پر پہنچا کہ نواز شریف کا علاج پاکستان میں نہیں ہو سکتا، جس کی وجہ سے بورڈ نے نواز شریف کے بیرون ملک علاج کے لیے سفر کرنے کی سفارش کی، اس میں تاخیر نواز شریف کی صحت اور زندگی پرسنگین مضر اثرات مرتب کرسکتی ہے۔ میاں نواز شریف کی طبیعت 21 اکتوبر کو خراب ہوئی اور ان کے پلیٹیلیٹس میں اچانک غیر معمولی کمی واقع ہوئی، اسپتال منتقلی سے قبل سابق وزیراعظم کے خون کے نمونوں میں پلیٹلیٹس کی تعداد 16 ہزار رہ گئی تھی، جو اسپتال منتقلی تک 12 ہزار اور پھر خطرناک حد تک گرکر 2 ہزار تک رہ گئی تھی۔ نواز شریف کو پلیٹلیٹس انتہائی کم ہونے کی وجہ سے کئی میگا یونٹس پلیٹلیٹس لگائے گئے، لیکن اس کے باوجود اُن کے پلیٹیلیٹس میں اضافہ اور کمی کا سلسلہ جاری ہے۔
خبر کا کوڈ : 827481
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب