0
Thursday 12 Dec 2019 12:47

گجرات مسلم کش فسادات، مودی کو کلین چٹ مل گئی

گجرات مسلم کش فسادات، مودی کو کلین چٹ مل گئی
اسلام ٹائمز۔ بھارتی ناناوتی مہتا کمیشن نے 2002ء میں گجرات مسلم کش فسادات میں وزیراعظم نریندر مودی اور ریاستی انتظامیہ کو تمام الزامات کی ذمہ داری سے بری قرار دے دیا۔ واضح رہے کہ گجرات فسادات بھارتی تاریخ کے بدترین فسادات میں سے ایک تھے اور موجودہ وزیراعظم نریندر مودی اس وقت گجرات کے وزیراعلیٰ تھے۔ ذرائع کے مطابق کمیشن نے ریاستی انتظامیہ، وزرا اور پولیس افسران کا براہ راست یا بالواسطہ فسادات میں ملوث ہونے کے الزام کو بھی مسترد کر دیا اور انہیں بری الذمہ قرار دیا۔ تحقیقاتی کمیشن گجرات مسلم کش فسادات کو بڑے پیمانے پر منظم سازش کے امکان بھی مسترد کر دیا۔ کمیشن نے گجرات میں مسلمانوں کے قتل عام کو 'پہلے سے طے شدہ سازش' یا 'منظم تشدد' کا نتیجہ قرار دینے سے بھی انکار کر دیا۔ 9 جلد اور 15 سو صفحات پر مشتمل کمیشن کی رپورٹ میں کہا گیا کہ 'کوئی ثبوت نہیں ہے کہ ان حملوں کو ریاست یا کسی وزیر کو اکسایا تھا یا ان کی حوصلہ افزائی کی گئی ہو'۔ خیال رہے کہ گجرات فسادات پر واشنگٹن نے نریندرمودی کے امریکا میں داخلے پر پابندی عائد کر دی تھی تاہم وزارت عظمیٰ کا منصب سنبھالتے ہی یہ پابندی ختم کر دی گئی تھی۔

 
خبر کا کوڈ : 832270
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب
ہماری پیشکش