0
Friday 10 Jan 2020 20:35

کراچی، مجلس وحدت مسلمین کی عراق میں امریکی دہشتگردی کیخلاف احتجاجی ریلی

کراچی، مجلس وحدت مسلمین کی عراق میں امریکی دہشتگردی کیخلاف احتجاجی ریلی
اسلام ٹائمز۔ مجلس وحدت مسلمین کراچی ڈویژن ضلع جنوبی کے زیر اہتمام عراق میں امریکی دہشتگردی سے شہید ہونے والے سردار قاسم سلیمانی و ابو مہدی المہندس اور ایرانی و عراقی عوام سے اظہار یکجہتی کیلئے بعد نماز جمعہ جامع مسجد آل عمران محمود آباد سے بلوچ کالونی شاہراہ فیصل تک نکالی گئی۔ احتجاجی ریلی میں علامہ مرزا یوسف حسین، مولانا علی عباس قمی، علی حسین نقوی، علی رحمانی، میر تقی ظفر سمیت بڑی تعداد میں مظاہرین نے شرکت کی۔ مظاہرین نے ہاتھوں پلے کارڈ اور بینز اٹھائے ہوئے تھے، جس میں قاسم سلیمانی اور ابو مہدی المہندس کی تصاویروں سمیت امریکا کے ہاتھوں بہیمانہ قتل کیخلاف مذمتی نعرے درج تھے۔ مظاہرین سے خطاب میں علامہ مرزا یوسف حسین و دیگر مقررین نے کہا کہ خطے میں امریکی غنڈہ گردی کیخلاف ملک کے مختلف شہروں میں احتجاج کا سلسلہ جاری رہے گا۔

رہنماؤں نے کہا کہ امریکا عالمی دہشتگرد اور خطے کے امن کا کھلا دشمن ہے، اس کا وجود عالم اسلام کیلئے شدید خطرہ ہے، ایران کے جنرل قاسم سلیمانی کو سرکاری دورے کے دوران نشانہ بنا کر امریکا نے اپنے عزائم واضح کر دیئے ہیں کہ کوئی عالمی قانون اور کوئی اخلاقی و سفارتی آداب اس کے راہ کی رکاوٹ نہیں بن سکتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ عراق میں امریکی اڈوں کو نشانہ بنا کر ایران نے دنیا کے باوقار مسلمانوں کی خواہشات کی ترجمانی کی ہے، آج ہر طرف یہ گونج سنائی دی جا رہی ہے کہ عالمی دہشتگرد امریکا کے خلاف جو ردعمل اکتالیس ممالک پر مشتمل نام نہاد اسلامی عسکری اتحاد نہیں دکھا سکا، وہ کام عالمی اقتصادی پابندیوں میں جھکڑے ہوئے ایک تنہا ملک اسلامی ایران نے کر دکھایا۔ انہوں نے کہا کہ امت مسلمہ پر یہ حقیقت آشکار ہوچکی ہے کہ امریکا مختلف حیلوں بہانوں سے ایک ایک کر مسلمان ملکوں کو تباہ کرتا جا رہا ہے۔

خطاب کرتے ہوئے رہنماؤں نے کہا کہ اسامہ کی تلاش کے نام پر افغانستان اور پھر کیمیائی ہتھیاروں کو بہانہ بنا کر عراق میں لاکھوں افراد کے قتل کے ذمہ دار امریکا اور اس کے اتحادی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ایران کے خلاف پر تولنے کا نتیجہ امریکا کو اس کی سوچ سے بھی زیادہ سنگین ملا ہے، رہبر معظم آیت اللہ سید علی خامنہ ای کے اس بیان نے امریکی صدر ٹرمپ کی راتوں کی نیندیں حرام کر دی ہیں کہ یہ محض ایک تھپڑ تھا، انتقام ابھی باقی ہے، امریکی صدر ٹرمپ کی بوکھلاہٹ اس کے خطاب سے عیاں تھی، اس کے چہرے کے تاثرات اس کے الفاظ کا ساتھ نہیں دے رہے تھے۔ انہوں نے کہا کہ مسلم ممالک سے امریکا کی بے دخلی مسلمانوں کی استحکام اور سالمیت کیلئے بھی ضروری ہے، تمام اسلامی ممالک کو چاہیئے کہ وہ امریکا سے اپنے تعلقات ہمیشہ کیلئے منقطع کر دیں۔
خبر کا کوڈ : 837715
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب
ہماری پیشکش