0
Thursday 16 Jan 2020 23:43

ہم سب آئین و قانون کے تابع ہیں، آئی جی کو تبدیل کرنا صوبائی حکومت کا استحقاق ہے، مرتضیٰ وہاب

ہم سب آئین و قانون کے تابع ہیں، آئی جی کو تبدیل کرنا صوبائی حکومت کا استحقاق ہے، مرتضیٰ وہاب
اسلام ٹائمز۔ ترجمان سندھ حکومت اور مشیر قانون و ماحولیات بیرسٹر مرتضی وہاب نے سندھ اسمبلی بلڈنگ کمیٹی روم میں ہنگامی پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ آئی جی سمیت ہم سب آئین و قانون کے تابع ہیں اور آئی جی کو تبدیل کرنا حکومت کا استحقاق ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کے آئین کو مدنظر رکھتے ہوئے اس امر کو یقینی بنایا گیا کہ صلح و مشاورت کے باہمی رویوں سے آئی جی سندھ کو تبدیل کیا جائے گا، اس معاملے پر وزیراعلی سندھ اور وزیر اعظم کے مابین 23 دسمبر کو مشاورت ہوئی تھی۔

ان کا کہنا تھا کہ وزیراعظم کو آئی جی سندھ کی پیشہ ورانہ کارکردگی کے بارے میں مفصل گفتگو کرنے کے بعد صوبائی کابینہ نے مکمل ہم آہنگی سے آئی جی سندھ کی کارکردگی پر عدم اعتماد کا اظہار کیا تھا، مگر تحریک انصاف کے رہنما اس معاملے کو سیاسی پوائنٹ اسکورنگ کے لئے استعمال کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اسی حکومت میں پنجاب اور خیبرپختونخوا میں کئی آئی جی اور چیف سیکریٹری تبدیل کیے مگر سوال نہیں اٹھے لیکن سندھ میں کارکردگی کے حوالے اور صوبائی چیف ایگزیکٹو مراد علی شاہ کے بار بار جواب طلبی میں تعاون نہ کرنے پر ایسا کیا جا رہا ہے تو اس معاملے کو سیاسی معاملہ بنا کر تحریک انصاف کے لیڈر اپنی دکان چمکا رہے ہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ سندھ بالخصوص کراچی میں جرائم کی شرح کا گراف بڑھنا پولیس کی ناکامی ہے، اس معاملے کو تنقید کا نشانہ بنایا جاتا ہے تو صوبائی حکومت کو مورد الزام ٹھہرایا جاتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ پولیس کے تمام معاملات آزاد ہیں، مگر آئی جی سندھ سے پولیس کی غفلت اور مالی امور کے معاملات پوچھے جاتے ہیں تو آئی جی سندھ سوال کا جواب دینا پسند نہیں کرتے اور بات کو کسی اور رخ موڑتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ صوبائی حکومت کو اپنے شہریوں کی حفاظت کے لئے جو بھی فیصلہ کرنا پڑے کرے گی۔
خبر کا کوڈ : 838926
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب
ہماری پیشکش