0
Friday 17 Jan 2020 19:07

مشرف کیس کی خصوصی عدالت کو غیر آئینی قرار دینے کے فیصلے کے خلاف سپریم کورٹ سے رجوع کا فیصلہ

مشرف کیس کی خصوصی عدالت کو غیر آئینی قرار دینے کے فیصلے کے خلاف سپریم کورٹ سے رجوع کا فیصلہ
اسلام ٹائمز۔ پاکستان بار کونسل نے سابق صدر جنرل ریٹائرڈ پرویز مشرف کے خلاف سنگین غداری کیس کی سماعت کے لیے بنائی گئی خصوصی عدالت کو غیر آئینی قرار دینے کے فیصلے کے خلاف سپریم کورٹ سے رجوع کرنے کا اعلان کر دیا۔ 13 جنوری کو لاہور ہائیکورٹ نے سابق صدر پرویز مشرف کے خلاف فیصلہ سنانے والی خصوصی عدالت کی تشکیل کو غیرآئینی قرار دیا تھا۔ پاکستان بار کونسل نے لاہور ہائیکورٹ کے اس فیصلے کے خلاف سپریم کورٹ سے رجوع کرنے کا اعلان کیا ہے۔ اٹارنی جنرل انور منصور خان کی زیر صدارت اجلاس میں کونسل کے وائس چیئرمین منتخب ہونے والے عابد ساقی ایڈووکیٹ نے پریس کانفرنس میں کہا کہ میڈیا پر اعلانیہ و غیراعلانیہ سینسرشپ آزادی اظہار کے بنیادی حقوق کے خلاف ہے، میڈیا کی آزادی کی جنگ میں ہم میڈیا کے ساتھ ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ ججز تعیناتی کے لیے عدلیہ، بار کونسل اور قانون سازوں کے ممبران ہونے چاہئیں اور  اس سال وکلا ایسے کسی ایشو پر ہڑتال نہیں کریں گے جس سے عوام کا حق متاثر ہو۔ انہوں نے لاہور ہائیکورٹ کی جانب سے پرویز مشرف کے خلاف سزا سنانے والی خصوصی عدالت کو غیر آئینی قرار دینے کے فیصلے کو سپریم کورٹ میں چیلنج کرنے کا اعلان بھی کیا۔
 
خبر کا کوڈ : 839040
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب
ہماری پیشکش