0
Friday 17 Jan 2020 21:37

بھارتی چیف آف ڈیفنس اسٹاف کا بیان انتہاء پسندی کا عکاس ہے، پاکستانی دفتر خارجہ

بھارتی چیف آف ڈیفنس اسٹاف کا بیان انتہاء پسندی کا عکاس ہے، پاکستانی دفتر خارجہ
اسلام ٹائمز۔ پاکستان نے بھارتی چیف آف ڈیفنس اسٹاف بپن راوت کے غیر ذمہ دارانہ بیان کی مذمت کر دی۔ تفصیلات کے مطابق ترجمان دفتر خارجہ عائشہ فاروق کا کہنا ہے کہ بپن راوت کے غیر ذمہ دارانہ بیان کی سختی سے مذمت کرتے ہیں، بھارتی چیف آف ڈیفنس اسٹاف کا بیان انتہاء پسندی کا عکاس ہے، کشمیر میں دہشت گردی کا مرتکب بھارت دہشت گردی پر بات نہیں کرسکتا۔ ترجمان دفتر خارجہ نے کہا ہے کہ جموں کشمیر کو دنیا کی سب سے بڑی جیل میں تبدیل کر دیا گیا، 5 اگست سے 80 لاکھ کشمیری محصور ہیں، 9 لاکھ بھارتی فوجی انسانی حقوق پامال کر رہے ہیں۔

پاکستان کا کہنا ہے کہ بھارتی بیان ایف اے ٹی ایف کی تکنیکی کارروائی کو سیاسی بنانے کی کوشش ہے، پاکستان نے عالمی برادری کو بھارت کی بدنیت کوششوں سے متعدد بار آگاہ کیا، توقع ہے کہ ایف اے ٹی ایف ممبران ان بھارتی سازشوں کو مسترد کر دیں گے۔ خیال رہے کہ گذشتہ روز بھارت کے سابق چیف آف آرمی اسٹاف اور موجودہ چیف آف ڈیفنس اسٹاف (سی ڈی ایس) جنرل بپن راوت نے انکشاف کیا تھا کہ مقبوضہ کشمیر میں پیلٹ گنز کا استعمال ہو رہا ہے۔ رپورٹ کے مطابق انسداد دہشت گردی کے پینل سے گفتگو کرتے ہوئے جنرل بپن راوت کا کہنا تھا کہ پیلٹ گن غیر مہلک ہتھیار ہے، جو اب مقبوضہ کشمیر میں شاذ و نادر ہی استعمال ہو رہا ہے۔
خبر کا کوڈ : 839089
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب
ہماری پیشکش