0
Sunday 5 Apr 2020 18:31

کورونا وائرس سے مقابلہ نہیں بلکہ احتیاط و رجوع الی اللہ کے ذریعے بچا جا سکتا ہے، محمد حسین محنتی

کورونا وائرس سے مقابلہ نہیں بلکہ احتیاط و رجوع الی اللہ کے ذریعے بچا جا سکتا ہے، محمد حسین محنتی
اسلام ٹائمز۔ جماعت اسلامی سندھ کے امیر محمد حسین محنتی نے کہا ہے کہ کورونا وائرس سے مقابلہ نہیں بلکہ احتیاط، توبہ و استغفار و رجوع الی اللہ کے ذریعے بچا جا سکتا ہے، یہ اللہ تعالیٰ کی طرف سے انسانوں کیلئے ایک آزمائش و امتحان اور قدرتی آفت ہے، اس کا مقابلہ نہیں کیا جا سکتا، جمعہ کی نماز پر پابندی، مساجد پر تالے اور آئمہ مساجد پر مقدمات تشویش ناک بات ہے، دینی جماعتوں اور علمائے کرام نے اس نازک موقع پر حکومتی اقدامات پر عمل اور ساتھ دیا ہے، اس کے باوجود سندھ حکومت کا آمرانہ رویہ افسوس ناک و قابل مذمت عمل ہے، آٹا و چینی چور قیادت سے کسی خیر کی امید عبس ہے، مگر اللہ کے ہاں دیر ہے اندھیر نہیں ہے، ان خیالات کا اظہار انہوں نے قباء آڈیٹوریم کراچی میں جے یو آئی کے رہنماء مولانا نورالحق قادری کی قیادت میں ملاقات کیلئے آئے وفد سے بات چیت کے دوران کیا، اس موقع پر صوبائی سیکریٹری اطلاعات مجاہد چنا بھی موجود تھے۔ محمد حسین محنتی نے کہا کہ کورونا وائرس بھی منافع خور تاجروں اور کرپٹ سیاستدانوں کو اپنی ظالمانہ روش سے نہیں روک سکا۔

محمد حسین محنتی نے کہا کہ عوام کو دہرے عذاب میں مبتلا کرنے والے وزیراعظم کے پیاروں کا احتساب کرکے قانون کی پکڑ میں لانا نیب اور دیگر انصاف دینے والے اداروں کیلئے چیلنج اور امتحان ہے۔ انہوں نے کہا کہ چند ٹکوں کی عیوض لوگوں کو فاقہ کشی پر مجبور کرنے والے حکمرانوں سے کسی طرح کورونا وائرس ریلیف فنڈ منصفانہ تقسیم کرنے کی امید نہیں کی جا سکتی ہے۔ صوبائی امیر نے زور دیا کہ حکومت کورونا وائرس کی صورتحال کے پیش نظر دو ماہ کیلئے بجلی کے بلوں میں سے پہلے 300 یونٹ کی معافی دے، پیٹرول اور گیس پر چھ ماہ کیلئے سیلز ٹیکس ختم کیا جائے، روز مرہ کی اشیائے خوردونوش کی قیمتوں پر کنٹرول کیلئے ٹھوس اقدامات اور خلاف ورزی پر بھاری جرمانے عائد کئے جائیں، تاکہ غریب عووام کو اس کا فائدہ پہنچ سکے۔
خبر کا کوڈ : 854829
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

ہماری پیشکش