0
Saturday 16 May 2020 09:09
حضرت علیؑ کا 20 نکاتی وصیت نامہ تقویٰ و پرہیز گاری کی بہترین تحریر ہے

مولائے متقیان نے تفرقہ بازی سے پرہیز کی وصیت کی، علامہ ریاض نجفی

مولائے متقیان نے تفرقہ بازی سے پرہیز کی وصیت کی، علامہ ریاض نجفی
اسلام ٹائمز۔ وفاق المدارس الشیعہ پاکستان کے صدر علامہ حافظ ریاض حسین نجفی نے کہا ہے کہ امیرالمومنین حضرت علی علیہ السلام کا 20 نکاتی وصیت نامہ تقویٰ و پرہیز گاری اور قرآن سے تمسک کی بہترین تحریر ہے، جو مولائے کائنات نے اپنے صاحبزادے امام حسن علیہ السلام کو شہادت سے پہلے ہدایت کی۔ یوم شہادت علی علیہ السلام کے موقع پر امیرالمومنینؑ کے مشہور وصیت نامے کا حوالہ دیتے ہوئے علامہ ریاض نجفی نے کہاکہ حضرت علیؑ نے خدا کی وحدانیت اور پیغمبر کی نبوت کی گواہی دیتے ہوئے فرمایا کہ اسلام تمام ادیان پر غلبے کا مذہب ہے ،میری نماز، عبادت، زندگی، موت اللہ کی طرف سے اور اللہ کیلئے ہے، اُس کا کوئی شریک نہیں۔ انہوں نے کہا کہ امام علی علیہ السلام نے تقویٰء الٰہی اختیار کرنے اور اللہ کی رسی کو مضبوطی سے پکڑنے، ایمان اور خداشناسی کی بنیاد پر متحد رہنے اور تفرقے سے پرہیز کی وصیت کی اور حدیث نبوی کا حوالہ دیتے ہوئے فرمایا کہ لوگوں کے مابین صلح صفائی کرانا ہمیشہ کے نماز روزہ سے افضل ہے اور جو چیز دین کو نابود کرتی ہے، فساد و اختلاف ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ امیرالمومنین نے اپنی وصیت میں عزیزوں، رشتہ داروں اور ہمسائیوں سے صلہ رحمی کرنے اور یتیموں کے حقوق کا خیال رکھنے کی تاکید کی جبکہ قرآن پر عمل میں سبقت لے جانے، حج ترک نہ کرنے، جہاد، زکٰوة کی ادائیگی اور نماز قائم کرنے کی بھی وصیت کی۔ وفاق المدارس الشیعہ کے سربراہ نے کہا کہ حضرت علی علیہ السلام نے اپنے مشہور وصیت نامے میں آل رسول، صحابہ کرام، فقرا اور ناداروں کے بارے میں اللہ سے ڈرتے رہنے کی وصیت کی۔ انہوں نے کہا کہ امر بالمعروف اور نہی عن المنکر کو ترک نہ کرنے کی وصیت کرتے ہوئے دوستانہ تعلقات کو فروغ دینے اور ایک دوسرے کیساتھ نیکی کرتے رہنے کو لاز م قرار دیا اور کہا کہ ایک دوسرے سے علیحدگی، تعلقات ختم کرنے، تفرقہ و تشتت سے پرہیز کرتے رہنا۔
خبر کا کوڈ : 862962
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب
ہماری پیشکش