0
Sunday 7 Jun 2020 11:01

لائن آف ایکچوئل کنٹرول پر چین اور بھارت میں کشیدگی

لائن آف ایکچوئل کنٹرول پر چین اور بھارت میں کشیدگی
اسلام ٹائمز۔ چین اور بھارت کے درمیان لداخ کے معاملے پر کشیدگی کم کرنے کیلئے مختلف سطح پر بات چیت کے 12 ادوار ناکام، لائن آف ایکچوئل کنٹرول پر دونوں ممالک کے درمیان کشیدگی انتہا پر پہنچ گئی۔ چین نے کہا بھارت امریکا کے ہاتھوں بیوقوف نہ بنے، دونوں ممالک کے لڑاکا طیارے حرکت میں آ گئے، چین نے اپنے کئی جدید ترین جنگی طیارے بارڈر کے اندر اڑائے، اس کے بعد بھارتی فضائیہ بھی حرکت میں آ گئی، چین جدید جنگی سازو سامان اور بھاری فوج لداخ بارڈر پر لے آیا ہے۔ بھارتی اخبار کے مطابق انڈین فوج نے مشرقی لداخ میں 60 کے قریب بوفورس توپیں ایل اے سی پر منتقل کر دی ہیں، گزشتہ روز دونوں ملکوں میں لیفٹیننٹ جنرل کی سطح پر مذاکرات ہوئے۔

میڈیا کی رپوٹس کے مطابق چین نے بھارت پر واضح کر دیا ہے کہ وہ اگر جنگ نہیں چاہتا تو ہمارے علاقے سے واپس چلا جائے ہم کسی صورت اپنی سرزمین پر قبضہ برداشت نہیں کریں گے، ہم اپنے علاقے لداخ سے دستبردار ہونے کیلئے تیار نہیں۔ بھارتی اور دیگر میڈیا کی رپوٹس کے مطابق چین کے جنگی طیارے لداخ میں گشت کر رہے ہیں، چین کی بڑے پیمانے پر جنگی تیاریوں نے مودی حکومت کے اوسان خطا کر دیئے ہیں۔ چین نے کئی ہزار فوجی بارڈر پر پہنچا دیئے اور ایک سو کے لگ بھگ کیمپس بنا دیئے ہیں، زمین دوز کنکریٹ مورچے بھی بنائے جار ہے ہیں، میڈیا کی رپورٹ کے مطابق چین کے طیارے بھارتی سرحد کے اندر بھی گھسے ہیں۔

سفارتی ذرائع کے مطابق بھارتی حکومت نے اپنے حلیف امریکا سے بھی رابطہ کیا مگر امریکا میں انتہائی سنگین حالات کی وجہ سے صدر ٹرمپ نے بھارت کو کوئی مثبت جواب نہیں دیا، بھارت کو اس وقت کسی ملک سے چین کیخلاف حمایت کی یقین دہانی نہیں کرائی گئی۔ ذرائع کے مطابق چین کے فوجی حکام نے بھارت کو واشگاف الفاظ میں خبردار کر دیا ہے کہ وہ ان کے مقبوضہ علاقے کو فوری خالی کر دے بصورت دیگر طاقت استعمال کر کے علاقے کو خالی کرایا جائے گا۔  
خبر کا کوڈ : 867066
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب
ہماری پیشکش